ایرانی پاسداران انقلاب کے حوالے سے امریکی فیصلہ ، حماس کی شدید مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فلسطینی تنظیم حماس نے ایرانی پاسداران انقلاب کو دہشت گرد تنظیم کا درجہ دینے سے متعلق امریکی فیصلے کی شدید مذمت کی ہے۔

منگل کے روز جاری ایک بیان میں حماس نے کہا کہ امریکی فیصلے کا ایک ہی مقصد نظر آ تا ہے اور وہ یہ کہ "ثابت قدمی اور استقامت کی جد و جہد کو نشانہ بنایا جائے"۔ تنظیم کے مطابق امریکی فیصلے سے اس بات کی تصدیق ہوتی ہے کہ یہ (ٹرمپ) انتظامیہ صہیونی مفادات کی خاطر متحرک ہے۔

حماس کا موقف ترکی اور قطر کے مواقف سے مطابقت رکھتا ہے جنہوں نے ایرانی پاسداران انقلاب کو دہشت گرد تنظیموں کی امریکی فہرست میں شامل کیے جانے کے حوالے سے امریکی صدر کے فیصلے کو مسترد کر دیا ہے۔

واشنگٹن نے پیر کے روز ایرانی پاسداران انقلاب کا نام غیر ملکی دہشت گرد تنظیموں کی فہرست میں درج کرنے کا سرکاری طور پر اعلان کیا تھا۔

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کا کہنا ہے کہ ایرانی پاسداران انقلاب کو ایک دہشت گرد تنظیم کا درجہ دینے سے امریکیوں کی جانوں کو تحفظ ملے گا اور مشرق وسطی میں زیادہ امن و استحکام پیدا ہو گا۔ امریکی نیٹ ورک فوکس نیوز سے گفتگو میں انہوں نے زور دیا کہ "ایرانی پاسداران انقلاب کو کمزور کیے بغیر مشرق وسطی میں سلامتی ، امن اور استحکام کو یقینی نہیں بنایا جا سکتا"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں