شدت پسند جماعتیں ثقافتی جمود کے شکار ماحول میں پروان چڑھتی ہیں : ڈاکٹر محمد العیسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

رابطہ عالم اسلامی کے سیکرٹری جنرل شیخ ڈاکٹر محمد العیسی نے تنازع اور گروہ بندی سے خبردار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ باہمی الفت کو مضبوط بنایا جائے اور دیگر لوگوں اور سابقہ تاریخی واقعات سے عبرت حاصل کی جائے۔

عربی روزنامے الشرق الاوسط کے مطابق العیسی نے یہ بات تاتارستان کے دارالحکومت میں نماز جمعہ کے ایک بڑے اجتماع سے خطاب میں کہی۔ انہوں نے باور کرایا کہ شدت پسند جماعتوں کا پروپیگنڈا ،، ثقافتی اور سماجی طور پر جمود کا شکار ہو جانے والے ماحول میں ہی پنپتا ہے۔

العیسی کے مطابق مسلمان کی بیداری اس گمراہ کن پروپیگنڈے کے انکشاف اور اس کی بآسانی ہزیمت کی ضمانت ہے۔

رابطہ عالم اسلامی کے سیکریٹری جنرل نے کہا کہ اسلامی شریعت زندگی کو منظم بناتی ہے۔ اس کے احکامات ایسی مشترکہ انسانی اقدار کی نمائندگی کرتے ہیں جس پر اہل عقل و دانش متفق ہیں۔ حق پر چلنے والا مسلمان امن و آتشی کا پرچار کرتا ہے اور ایک ایسے درخت کی مانند ہوتا ہے جو سب کے لیے بھلائی اور سایہ پیش کرتا ہے۔ یہ تشدد اور انتہا پسندی کی روش سے دور ہوتا ہے۔ اقوال سے پہلے اس کے افعال بولتے ہیں۔ یہ زمین پر چلتا اخلاق کا ایسا پیکر ہوتا ہے جو دوسروں پر اپنے ایمان کی روشنی ڈالتا ہے۔

العیسی کا کہنا تھا کہ "حق پر چلنے والا مسلمان سچا ہوتا ہے اور اپنے وعدے کو پورا کرتا ہے۔ وہ ہر میثاق کی پاسداری کرتا ہے۔ اس میں اُن ممالک کے آئین اور قوانین بھی شامل ہیں جہاں وہ سکونت پذیر ہوتا ہے۔ یہ مسلمان ہر قسم کی نفرت انگیزی اور نسل پرستی سے دور ہوتا ہے بلکہ یہ تو دلوں کو جوڑنے اور ان کی اصلاح کے لیے کام کرتا ہے۔ وہ سماج میں مذاہب اور نسل کے اختلاف کے باوجود باہمی بقاء کو خواہاں ہوتا ہے۔ وہ ثقافتی اختلاف کی بھی رعایت کرتا ہے کیوں کہ وہ اختلاف ، تنوع اور تعدد کے حوالے سے خالق کائنات کی سنت پر ایمان رکھتا ہے۔ یہ مسلمان کسی کو اس بات کی اجازت نہیں دیتا کہ وہ اس مذہبی اور ثقافتی اختلاف کو اپنے مذموم مقاصد پورا کرنے کے واسطے استعمال کرے اور سماج میں اشتعال انگیزی پھیلائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں