یمن میں آئینی حکومت کی حمایت کے لیے نیا سیاسی اتحاد قائم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں صدر عبد ربہ منصورھادی کی زیر قیادت قائم آئینی حکومت کی حمایت کے لیے مختلف سیاسی شخصیات اور جماعتوں نے ایک نیا سیاسی اتحاد تشکیل دیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کےمطابق یمن کی مختلف بڑی سیاسی جماعتوں کا اہم اجلاس وادی خضر موت کے مرکزی شہر سیئون میں اتوار کے روز منعقد ہوا۔اجلاس میں ملک کو ایران نواز حوثی ملیشیا کے چنگل سے نکالنے کے لیے آئینی حکومت اور سرکاری فوج کے ساتھ معاونت کا اعلان کیا گیا۔

یمن میں سیاسی جماعتوں پر مشتمل اس نئے سیاسی اتحاد کو "یمن قومی سیاسی اتحاد" کا نام دیاگیا ہے جس میں ملک کی کئی بڑی سیاسی جماعتیں اورشخصیات شامل ہیں۔

اجلاس کے بعد میڈیا کو جاری ایک بیان میں کہاگیا ہے کہ آئینی حکومت کی حمایت کے لیےسیاسی اتحاد کی تشکیل وقت کی ضرورت ہے۔ تمام قومی سیاسی قوتوں کو ملک کی آئینی اتھارٹی اور سرکاری فوج کے ساتھ مل کر ایرانی حمایت یافتہ حوثی باغیوں کا قلع قمع کرنا ہوگا۔

العربیہ ڈاٹ‌نیٹ کےمطابق حکومت کی حمایت کے لیے قائم ہونے والے نئے سیاسی اتحاد میں پیپلز کانگریس، الاصلاح سماج پارٹی، اشتراکی پارٹی، الناصری تنظیم، جنوبی تحریک اورالرشاد السلفی پارٹی سمیت 18 جماعتیں شامل ہیں۔

یمن کےوزیر اطلاعات معمر الاریانی نے نئے سیاسی اتحاد کی تشکیل ملک کو حوثی باغیوں سے آزاد کرانے کی جنگ میں آئینی حکومت کی غیرمعمولی کامیابی قرار دیا۔ ان کاکہنا تھا کہ اس وقت ملک کی تمام نمائندہ سیاسی قوتیں ایرانی حمایت یافتہ مٹھی بھر حوثی فسادیوں کے خلاف اور آئینی حکومت کی پشت پرکھڑی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں