.

'پی ایل او' کا نو منتخب وزیراعظم سےاسرائیل سے تعلقات محدود کرنے پرزور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تنظیم آزادی فلسطین کی ایگزیکٹو کمیٹی نے نو منتخب وزیراعظم محمد اشتیہ پر زور دیا ہے کہ وہ اسرائیل کے ساتھ تعلقات محدود کرنے کے حوالے سے کیے گئےسابقہ فیصلوں‌پرعمل درآمد یقینی بنائیں۔

خیال رہےکہ چند ماہ قبل فلسطین نیشنل کونسل کے اجلاس میں اسرائیل کوتسلیم کرنے کا فیصلہ واپس لینے، اسرائیل کے ساتھ سیکیورٹی تعاون ختم کرنے اور صہیونی ریاست کے ساتھ اقتصادی اورمعاشی روابط ختم کرنے کی سفارش کی گئی تھی۔
پی ایل اوکی طرف سے اسرائیل سےتعلقات محدود کرنےکے لیے مختلف کمیٹیاں تشکیل دی گئیں، جن میں ایک حکومتی کمیٹی بھی شامل تھی۔اس کمیٹی نے پیرس اکنامک پروٹوکول پرعمل درآمد روکنے کے لیے اقدامات کرنا تھے۔ یہ کمیٹی اس تشکیل دی گئی جب اسرائیل نے فلسطینی اتھارٹی کےواجب الاداء ٹیکسوں کی ادائی روک تھی۔ اسرائیل کی طرف سے رقوم روکے جانےکے نتیجے میں فلسطینی اتھارٹی کو شدید مالی بحران کا سامنا کرنا پڑا جس کے بعد اس نے اسیران اور شہداء کے خاندانوں کو ماہانہ بنیادوں پر الائونسز کی فراہم بند کردی ہے۔

ایگزیکٹو کمیٹی نے عرب ممالک پر فلسطینی اتھارٹی کو درپیش مالی بحران کے حل میں‌مدد دینے پر بھی زور دیا اور تیونس میں حال ہی میں ہونے والےعرب لیگ کےسربراہ اجلاس میں فلسطین کے حوالےسے اٹھائے گئےاقدامات پرعمل درآمد کا مطالبہ کیا گیا۔