حوثیوں کےعقوبت میں وحشیانہ تشدد سےتعز کے 14 شہری جاں‌بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یمن میں حوثی ملیشیا کے ہاتھوں غیرقانونی طورپر تعزسے اغواء‌ کیے گئے 14 شہریوں کو دوران حراست وحشیانہ تشدد کرکے موت کےگھاٹ اتاردیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق لاپتا شہریوں کے لواحقین کی رابطہ کمیٹی کے مطابق حوثی ملیشیا نے 2018ء کےدوران مجموعی طورپر تعز سے 553 شہریوں کو اغواء کیاجن میں سے 14 کو دوران حراست تشدد کرکے قتل کردیا گیا۔

لاپتاشہریوں‌کے لواحقین کا کہنا ہے کہ حوثی ملیشیا کےہاتھوں اغواء کیے گئے 14 شہریوں کو دوران حراست تشدد کرکے قتل کیا گیا۔

لاپتا شہریوں کے لواحقین نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ گذشتہ ایک سال کےدوران 70مغویوں کو رہا کیاگیا جو وحشیانہ تشدد سے ذہنی توازن کھو چکےہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ بہت سے شہری اپنے لاپتا ہونے والے افراد کے بارے میں شکایت کرنے سےبھی ڈرتے ہیں۔ ان میں سے 45 افراد کو تاوان کی وصولی کے بعد رہا کیاگیا۔

لاپتا افراد کے لواحقین نے حوثی ملیشیا کےہاتھوں جبری گم شدگیوں اور عقوبت خانوں میں وحشیانہ تشدد کا سلسلہ بند کرانے کے لیے انسانی حقوق کی تنظیموں کواپنی ذمہ داریاں پوری کرنے پر زور دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں