غربِ اردن میں اسرائیلی فوج کی کارروائی ، فلسطینی کا مکان بارود سے اڑا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے غربِ اردن میں ایک فلسطینی نوجوان کا مکان مسمار کردیا ہے۔اس پر گذشتہ ماہ دو صہیونیوں کو فائرنگ اور چھرا گھونپ کر قتل کرنے کا الزام تھا۔

اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ 19 سالہ فلسطینی عمر ابو لیلیٰ نے مارچ میں غربِ اردن میں واقع ایک یہودی بستی آریل میں ایک فوجی کو چھرا گھونپ دیا تھا اور دوسرے کو گولی مار ہلاک کردیا تھا۔اسرائیلی فوجیوں نے تین روز کی مسلسل تلاش کے بعد اس فلسطینی کو جالیا تھا اور اس کو گولی مار کر موت کی نیند سلا دیا تھا۔

اسرائیلی فوجیوں نے بدھ کی صبح غربِ اردن کے شمال میں واقع گاؤں زاویہ میں اس مقتول فلسطینی کے خاندان کے مکان کو مسمار کردیا ہے۔انھوں نے پڑوس میں واقع مکینوں سے بھی مکان خالی کرا لیے تھے اور انھیں نزدیک واقع ایک اسکول میں منتقل کردیا تھا۔اس کے بعد اس مکان کو بارود سے اڑا دیا۔

واضح رہے کہ اسرائیلی فوج بالعموم مبیّنہ فلسطینی حملہ آوروں یا ان کے خاندانوں کے مکانوں کو بلڈوزروں یا دھماکا خیز مواد سے منہدم کردیتی ہے اور اس کا کہنا ہے کہ اس کی یہ کارروائی مستقبل میں حملوں کے انسداد کا سبب بن سکتی ہے لیکن انسانی حقوق کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ مکانوں کی مسماری فلسطینی خاندانوں کو اجتماعی سزا دینے کے مترادف ہے اور یہ سلسلہ بند ہونا چاہیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں