ایرانیوں کی کالز سننے کے لیے ایران کے زیر نگرانی حوثیوں کے نیٹ ورک کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

صنعاء میں باغی حوثی ملیشیا کے زیر کنٹرول ٹیلی کمیونی کیشن اور انفارمیشن ٹکنالوجی کی وزارت میں ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ باغی ملیشیا کے پاس ایک خصوصی نیٹ ورک ہے۔ اس نیٹ ورک کا کام یمنی شہریوں کی نجی کالوں کی کڑی نگرانی کرنا اور ان کو سننا ہے۔

خبروں سے متعلق ویب سائٹوں نے مذکورہ ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ یہ نیٹ ورک تربیت یافتہ افراد کے گروپ پر مشتمل ہے جن کو صنعاء پر حوثی ملیشیا کے قبضے سے پہلے کے عرصے میں تہران میں ایرانی اور بیروت میں لبنانی حزب اللہ کے ماہرین نے تربیت دی تھی۔ ان افراد کے مشن میں فون کالز کا سننا، انٹرنیٹ پر کڑی نگرانی، ای میلز اکاؤنٹس اور سوشل میڈیا اکاؤنٹس کو ہیک کرنا بالخصوص وہ اکاؤنٹس جن کا تعلق انسانی حقوق کے سرگرم کارکنان اور میڈیا پرسنز سے ہے۔

مذکورہ ویب سائٹوں نے تصدیق کی ہے کہ بہت سے ایرانی ماہرین اس وقت دارالحکومت صنعاء میں موجود ہیں اور رابطوں کی نگرانی کے عمل کی قیادت کر رہے ہیں۔ حوثیوں کے پریوینٹو سیکورٹی کے ادارے نے بعض سیاسی قیدیوں سے تحقیق کے سلسلے میں ان شخصیات کی نجی کالز کے ریکارڈ کو استعمال کیا۔ یہ استعمال پبلک پراسیکیوشن کی اجازت یا حکم کے بغیر عمل میں آیا۔

یمن میں ٹیلی کمیونی کیشن اور آئی ٹی کی وزارت ان اہم ترین حکومتی اداروں میں سے ایک ہے جن پر حوثی ملیشیا نے قبضہ کیا۔ حوثی باغی اس وزارت کو اپنے سیاسی حریفوں کے خلاف جنگ کے عمل میں استعمال کرنے کے علاوہ اس کی بھاری آمدنی کو ہتھیا کر اسے لڑائی کے محاذوں پر جنگجوؤں کی سپورٹ کے واسطے بھی کام میں لا رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں