ایرانی کردستان میں پاسدارن انقلاب اور مسلح افراد میں‌ جھڑپ، ایک فوجی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایران کے مغربی صوبہ کردستان میں منگل کے روز مسلح افراد اور پاسداران انقلاب کے درمیان تصادم کے نتیجے میں ایک ایرانی فوجی ہلاک ہوگیا۔

خبر رساں ادارے'مہر' نے بتایا کہ مسلح جھڑپ میں متعدد جنگجوئوں کے مارے جانے کی بھی غیر مصدقہ اطلاعات سامنے آئی ہیں۔

ایران کے صوبہ کردستان میں کرد مسلح‌گروپوں اور پاسداران انقلاب کےدرمیان جھڑپیں معمول کی بات ہے۔ ایران کے کرد ایرانی رجیم کے امتیازی سلوک کے خلاف اورصوبائی خود مختاری کے لیے جدو جہد کررہے ہیں۔ ایران میں کردوں کے علاوہ عرب اور بلوچ عوام بھی علاحدگی کی تحریکیں چلا رہے ہیں مگر ایران انہیں طاقت کے ذریعے کچلنے کی ظالمانہ پالیسی پرعمل پیرا ہے۔

ایرانی خبر رساں ادارے کے مطابق مسلح عناصر انقلاب دشمن عناصر پرمشتمل تھے۔انہوں‌نے کردستان میں کامیاران کے مقام پر پاسداران انقلاب کی ایک پارٹی پرفائرنگ کردی جس کے نتیجے میں ایک فوجی ہلاک ہوگیا۔

یہ جھڑپ ایک ایسےوقت میں ہوئی ہے جب دوسری جانب ایرانی رجیم نے زیرحراست کرد رہ نمائوں کی سزائے موت پرعمل درآمد میں‌بھی اضافہ کردیا ہے۔ ایرانی جیلوں‌میں 100 کرد رہ نما سزائےموت کے منتظر ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں