.

مقتدیٰ الصدرکے متنازع بیان پر بحرین کا عراق سے احتجاج، قائم مقام سفیر کی دفتر خارجہ طلبی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے سرکردہ شیعہ رہ نما مقتدیٰ الصدر کی جانب سے بحرین کی قیادت کو تنقید کا نشانہ بنانے اور منامہ کے اندرونی امور میں مداخلت پر بحرین نے عراق سے شدید احتجاج کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق گذشتہ روز بحرین نے منامہ میں متعین عراق کے قائم مقام سفیر نھاد رجب عسکر العانی کو دفترخارجہ طلب کرکےان سے مقتدیٰ الصدر کے متنازع بیان پر سخت احتجاج کیا۔

اس موقع پر بحرین کےسیکرٹری خارجہ وحید مبارک سیار نے عراق کےقائم مقام سفیر سے کہا کہ ان کے ملک کو مقتدیٰ الصدر کےمتنازع اور نا مناسب بیان کی وضاحت کرنا ہوگی۔ انہوں‌نے کہا کہ مقتدیٰ الصدر کی طرف سے بحرین کی قیادت کو شدید تنقید کانشانہ بنانے کےساتھ ساتھ منامہ کے اندرونی معاملات میں مداخلت کی بھی مذموم کوشش کی ہے۔ بحرینی عہدیدار کا کہنا تھا کہ منامہ کے اندرونی امور میں مداخلت اور قیادت کو بے جا طورپر بدنام کرنے کی کوشش بین الاقوامی معاہدوں اورعالمی قوانین کی سنگین خلاف ورزی ہے۔ مقتدیٰ الصدرکے بیان سے عراق اور بحرین کےدرمیان تعلقات متاثر ہوسکتے ہیں۔اس موقع پر بحرینی وزارت خارجہ کی طرف سے قائم مقام عراقی سفیرکو ایک احتجاجی یاداشت بھی پیش کی گئی۔