.

یمن کی سرکاری فوج نے حجۃ گورنری میں حوثیوں کی بچھائی 7 ہزار بارودی سرنگیں تلف کردیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں سرکاری فوج کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ شمال مغربی حجۃ گورنری میں سیکیورٹی فورسز نے حوثی ملیشیا کی طرف سے بچھائی گئی 7 ہزار بارودی سرنگیں تلف کردیں۔

العربیہ ڈاٹ‌نیٹ کے مطابق یمنی فوج کے پانچویں ملٹری ریجن کےمیڈیا سینٹر کی طرف سے جاری ایک بیان میں‌کہا گیا ہے کہ سیکیورٹی فورسز نےحجۃ گورنری میں عبس ڈائریکٹوریٹ، عزلہ بنی حسن اور حیران کے مقامات پرحوثیوں کی طرف سے بچھائی گئی بارودی سرنگوں کی تلفی کا آپریشن کیا جس میں اب تک سات ہزار بارودی سرنگیں تلف کی گئی ہیں۔

بیان میں مزید مزیدکہا گیا ہےکہ حوثیوں کی بچھائی گئی بارودی سرنگیں کی تلفی کا آپریشن انجینیرنگ کور کےکیپٹن محمد ردمان کی زیرنگرانی کیا گیا۔ اس دوران مختلف سائز، اقسام اور شکلوں‌کی قریبا سات ہزار بارودی سرنگیں ناکارہ بنائی گئیں۔
کیپٹن ردمان کاکہنا ہے کہ انجینرنگ اسکواڈ نے میدی، حیران، عبس اور دیگر علاقوں میں اب تک مجموعی طورپر 32 ہزار بارودی سرنگیں تلف کرکے شہریوں کی جانوں کو ایک بڑے خطرے سے بچا لیا۔

ادھر سعودی عرب کی انجینیر کور 800 کے سربراہ کی طرف سے کہا گیا ہے کہ یمن میں حوثی ملیشیا کی طرف سے بچھائی گئی بارودی سرنگوں کی تلفی میں یمنی فوج کے ساتھ تعاون کیا جا رہا ہے۔

یمن کے سرکاری ذرائع کے مطابق حوثی ملیشیا کی شہری آبادیوں کےاندر اور قریب بچھائی گئی بارودی سرنگوں کے دھماکوں میں پانچ سال کے دوران ایک ہزار شہری جاںب‌ بحق ہوچکے ہیں ان میں 200 بچے شامل ہیں جبک 1500 شہری زخمی ہوئے ہیں۔ زخمیوں میں100خواتین اور 250 بچے شامل ہیں۔