بحرین کے اندرونی معاملات میں مداخلت کو مسترد کرتے ہیں : سعودی عرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی وزارت خارجہ کے ایک ذمے دار ذریعے کا کہنا ہے کہ مملکت برادر ملک بحرین کے اندرونی معاملات میں مداخلت اور اس کی خود مختاری اور امن و استحکام کو نقصان پہنچانے والے ہر امر کو مسترد کرتی ہے۔

اس سے قبل متحدہ عرب امارات کی وزارت خارجہ اور عالمی تعاون کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ ابوظبی ،،، جمہوریہ عراق کی طرف سے بحرین پر تنقید کو تشویش کی نظر سے دیکھتا ہے۔ بیان کے مطابق برادر ملک بحرین کے اندرونی معاملات میں مداخلت اور منامہ کی معزز قیادت پر تنقید کسی صورت میں قابل قبول نہیں۔

امارات کی حکومت نے عراق اور بحرین پر زور دیا کہ وہ ایک دوسرے کے ساتھ کشیدگی بڑھانے کے بجائے بھائی چارے کے فضا کو فروغ دیں۔ بیان میں کہا گیا کہ ہم باہمی تعاون، رابطے، ایک دوسرے کی خود مختاری کے احترام اور دوسروں کے معاملات میں عدم مداخلت کےاصول پر چلنے پر زور دیتے ہیں۔

خیال رہے کہ حال ہی میں عراق کے شیعہ مذہبی رہ نما مقتدیٰ الصدر نے بحرین کی قیادت کوشدید تنقید کا نشانہ بنایا جس پر منامہ نے عراق سے باضابطہ طور پر احتجاج بھی ریکارڈ کرایا ہے۔

اسی تناظر میں متحدہ عرب امارات نے عراق اور بحرین پر زور دیا ہے کہ وہ کشیدگی کم کریں اور خطے کے استحکام کے لیے کی جانے والی مشترکہ کوششوں کو آگے بڑھانے پرتوجہ دیں

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں