.

امریکا ایرانی تیل کی برآمدات پر پابندی کا فیصلہ واپس لے:قطر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قطر نے امریکا کی جانب سے ایران سے تیل کی خریداری پر دی گئی مہلت ختم کرنے کے فیصلے کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ قطری وزیر خارجہ محمد بن عبدالرحمان آل ثانی نے بدھ کے روز ایک بیان میں کہا کہ امریکی فیصلے سے عالمی معیشت پر مثبت نہیں بلکہ منفی اثرات مرتب ہوں‌گے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کےمطابق قطری وزیرخارجہ نے کہا کہ ایران سے تیل خریدنےپرپابندی کے فیصلےکا خود امریکا کو نقصان پہنچے گا۔ اس کےعلاوہ ایرانی تیل پرانحصار کرنےوالے ممالک براہ راست امریکی فیصلے سے متاثر ہوں گے۔

انہوں‌نے امریکا پر زور دیاکہ وہ ایرانی تیل کی برآمدات پر پابندی کا فیصلہ واپس لے۔

محمد عبدالرحمان آل ثانی نے مزیدکہا کہ قطر امریکا کی طرف سے ایران پریک طرفہ پابندیوں کو تسلیم نہیں کرتا۔ امریکی فیصلے سے خطے میں جاری بحرانوں کے حل میں کوئی مدد نہیں ملے گی۔ اگر امریکا بحرانوں کو حل اوراختلافات دور کرن چاہتا ہےتو اسے مذاکرات کی میز پرآنا ہوگا۔

خیال رہے کہ امریکا نے 22 اپریل کو ایران سے تیل خرید کرنےوالے 8 ممالک کو 2 مئی تک دی گئی مہلت میں مزید توسیع نہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔