.

صنعاء : اتحادی طیاروں نے حوثیوں کے ٹھکانوں کی اینٹ سے اینٹ بجا دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کے سرکاری ترجمان کرنل ترکی المالکی نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ اتحاد کی مشترکہ فورسز کی کمان نے بدھ کی شب (10:39 پر) صنعاء میں الدیلمی کے فوجی اڈے پر عسکری اہداف کو نشانہ بنانے کے لیے کارروائی کی۔ اس دوران ڈرون طیاروں کی دیکھ بھال کے مقامات، رابطوں کے نظام، غیر ملکی ماہرین کی موجودگی کے ٹھکانوں اور ایران نواز دہشت گرد حوثی ملیشیا کے عناصر کے جتھوں پر بم باری کی گئی۔

المالکی نے واضح کیا کہ حوثیوں نے صنعاء کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کو فوجی بیرک میں تبدیل کر دیا ہے اور دہشت گرد کارروائیوں کے واسطے یہاں سے ڈرون طیارے بھی اڑان بھرتے ہیں جن سے علاقائی اور بین الاقوامی امن کو خطرہ ہے۔ یہ کارروائیاں بین الاقوامی اور انسانی قوانین کی صریح خلاف ورزی ہے۔

عرب اتحاد کے ترجمان نے باور کرایا کہ اتحادی طیاروں کی جانب سے نشانہ بنانے کی کارروائی بین الاقوامی قانون اور ضابطوں کے عین مطابق تھی۔ اتحاد کی مشترکہ فورسز کی کمان نے صنعاء کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے اطراف شہری مقامات کو بچانے کے لیے تمام تر احتیاطی اقدامات کیے تھے۔

اس سے قبل العربیہ کے ذرائع کے مطابق اتحادی طیاروں نے الضالع صوبے میں بیت الشوکی کے علاقے میں حوثیوں کو نشانہ بنایا۔ کارروائی کے نتیجے میں باغی ملیشیا کے متعدد ارکان ہلاک اور زخمی ہوئے۔ اس کے علاوہ عسکری گاڑیاں بھی تباہ ہو گئیں۔

ادھر قعطبہ کے شمال میں مریش کے علاقے میں یمنی فوج کی العمالقہ فورسز کے یونٹوں نے پہاڑی علاقے کے نزدیک حوثی ملیشیا کے ٹھکانوں اور کمک پر راکٹوں کے ذریعے بم باری کی۔ اس کے نتیجے میں ملیشیا کی عسکری گاڑیاں جل گئیں اور درجنوں باغی ہلاک اور زخمی ہوئے۔

عرب اتحاد کے لڑاکا طیاروں نے تعز صوبے کے جنوب میں واقع علاقے الاعبوس میں کیٹوشیا راکٹ داغنے کے پلیٹ فارم اور اور اڈے پر کئی حملے کیے۔ اسی علاقے میں کورنیٹ راکٹ داغے جانے کے لیے استعمال ہونے والے ایک پلیٹ فارم کو بھی نشانہ بنایا گیا۔ اس کے نتیجے میں پلیٹ فارم تباہ ہو گیا اور وہاں کام کرنے والے تمام حوثی مارے گئے۔