.

شام : شمال مغربی صوبہ حماہ میں اسدی فوج اور باغی گروپوں میں لڑائی ، 26 جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے شمال مغربی صوبے حماہ میں صدر بشارالاسد کی وفادار فورسز اور باغی گروپوں کے درمیان لڑائی کے نتیجے میں 26 جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق کی اطلاع کے مطابق صوبہ حماہ کے دو دیہات میں سوموار کے روز شدید لڑائی میں مرنے والوں میں 11 حکومت نواز جنگجو بھی شامل ہیں۔لڑائی میں شام میں القاعدہ کی سابقہ شاخ ہیئت تحریرالشام ( ایچ ٹی ایس) اور اس کی اتحادی جماعت اسلامی ترکستان کے پندرہ جنگجو مارے گئے ہیں۔

فریقین کے درمیان یہ لڑائی شامی فورسز کی حماہ میں واقع دو دیہات اور تزویراتی اہمیت کی حامل ایک پہاڑی چوٹی کی جانب پیش قدمی کے بعد شروع ہوئی تھی۔

شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا نے یہ اطلاع دی ہے کہ فوجیوں نے حماہ اور اس کے پڑوس میں واقع صوبہ ادلب میں برسرپیکار مسلح گروپوں کے خلاف ’’سخت کارروائیاں ‘‘ کی ہیں اور ان میں مسلح جنگجو گروپوں کی رسد کی بہم رسانی کے لیے استعمال ہونے والے راستوں اور علاقوں کو نشانہ بنایا ہے۔

اس علاقے پر ایچ ٹی ایس کا قبضہ ہے ۔گذشتہ ماہ شامی فوج اور اس کے اتحادی روس کے لڑاکا طیارو ں نے اسی علاقے میں تباہ کن بمباری کی تھی جس کے بعد علاقے سے لوگوں کی ایک بڑی تعداد اپنا گھربار چھوڑنے پر مجبور ہوگئی تھی۔

رصدگاہ نے مزید اطلاع دی ہے کہ ادلب اور اس کے پڑوس میں واقع علاقوں پر شامی حکومت اور اس کے اتحادی روس کے فضائی حملوں اور توپ خانے سے گولہ باری سے ایک ہی خاندان کے چار افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ ادلب میں موجود اے ایف پی کےایک فوٹوگرافر نے بتایا ہے کہ ان حالیہ حملوں میں متعدد مکانات مکمل طور پر تباہ ہوگئے ہیں۔اقوام متحدہ کے مطابق فضائی حملوں میں اسکولوں اور طبی مراکز کو بھی نشانہ بنایا گیا ہے۔