.

شام: ادلب میں فوجی کارروائی کے نتیجے میں عظیم انسانی المیے کا اندیشہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام سے متعلق اقوام متحدہ کے زیر انتظام تحقیقاتی کمیٹی کے سربراہ پاؤلو بینیرو نے خبردار کیا ہے کہ ادلب صوبے میں شامی اپوزیشن کے جنگجوؤں کے آخری مرکز میں ایک جامع تنازعہ ایک ایسے انسانی المیے کو جنم دے سکتا ہے جس کا تصور ممکن نہیں۔

جمعرات کے روز ایک پریس کانفرنس میں بینیرو کا کہنا تھا کہ غالب گمان ہے کہ کسی بھی فوجی کارروائی کے دوران 'وسیع پیمانے' پر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا ارتکاب ہو گا۔

اقوام متحدہ کے عہدے دار کے مطابق شامی حکومت اور اس کے حلیفوں کی جانب سے حالیہ فضائی اور زمینی حملہ 'خطرناک جارحیت' ہے۔ اس کے نتیجے میں ایک ہفتے کے اندر درجنوں شہری جاں بحق ہوئے اور 1.5 لاکھ سے زیادہ افراد بے گھر ہو گئے۔

بینیرو نے شمالی شام کی اراضی پر قابض داعش تنظیم کے شدت پسندوں کو نکالنے کے لیے آخری مہم جوئی کے دوران لاکھوں شہریوں کے بے گھر ہونے پر بھی اپنی تشویش کا اظہار کیا۔