.

غزہ پٹی کی سرحد پر جھڑپوں میں اسرائیلی فائرنگ سے ایک فلسطینی جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

غزہ پٹی اور اسرائیل کے درمیان سرحد پر جمعے کے روز قابض اسرائیلی فوج نے مظاہرین پر فائرنگ کر دی۔ اس کے نتیجے میں ایک فلسطینی نوجوان جاں بحق ہو گیا۔

غزہ پٹی میں حماس کے زیر انتظام وزارت صحت کے ترجمان اشرف القدرہ کے مطابق 24 سالہ عبداللہ عبدالعال رفح شہر کے مشرق میں پیٹ میں گولیاں لگنے سے زخمی ہو گیا تھا۔

رمضان کے پہلے جمعے کے روز غزہ پٹی اور اسرائیل کے درمیان سرحدی باڑ کے نزدیک "حق واپسی" کے سلسلے میں احتجاج نے جھڑپوں کی صورت اختیار کر لی۔ اس دوران اسرائیلی فوج کی کارروائی میں کم از کم 30 فلسطینی زخمی ہوئے۔

اشرف القدرہ کے مطابق زخمیوں میں 13 فلسطینی براہ راست فائرنگ کا نشانہ بنے جن میں چار بچے بھی ہیں۔ ان کے علاوہ آنسو گیس کی براہ راست شیلنگ سے 17 دیگر افراد زخمی ہوئے۔

جمعے کے روز احتجاج میں ہزاروں فلسطینیوں نے شرکت کی۔ گزشتہ ہفتے کے مظاہرے کے مقابلے میں اس مرتبہ کا احتجاج نسبتا کم پُرتشدد رہا۔ فلسطینیوں کی جانب سے کوئی آتشی غبارہ نہیں داغا گیا جب کہ اسرائیلی فوج کی جانب سے کی گئی فائرنگ بھی پہلے سے کم رہی۔

جمعرات کی شام غزہ پہنچنے والا مصری سیکورٹی وفد سرحد کے دونوں جانب مذکورہ احتجاج کی نگرانی کر رہا ہے۔

مصر کی وساطت سے پیر کی صبح فلسطینیوں اور اسرائیلیوں کے درمیان فائر بندی پر اتفاق ہو گیا۔ اس سے قبل دو روز تک ہونے والا عسکری تصادم 2014 کی جنگ کے بعد شدید ترین تھا۔

ان دو روز میں 25 فلسطینی جاں بحق اور 4 اسرائیلی ہلاک ہوئے۔

فلسطینی ذمے داران کے مطابق حالات پرسکون بنانے کے حوالے سے مفاہمت کے ضمن میں اسرائیل غزہ پٹی کے شدید محاصرے میں نرمی پر آمادہ ہو گیا ہے۔