.

حوثیوں کا الحدیدہ سے انخلا ڈراما ہے: یمنی حکومت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمنی صدر کے مشیر اور وزیر مملکت محمد العامری نے کہا ہے کہ الحدیدہ سے باغی حوثیوں کا انخلا ایک ڈرامے اور دھوکے کے سوا کچھ نہیں۔ انھوں نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ الحدیدہ میں جاری صورت حال کو واضح کرے۔

ہفتے کی شب ’’العربیہ‘‘ سے گفتگو میں محمد العامری نے اس رائے کا اظہار کیا کہ الحدیدہ سے انخلا سے متعلق سویڈن میں طے پانے والا معاہدہ مذاق بن کر رہ گیا ہے۔ یہ حقیقت اب کھلا راز ہے کہ اس معاہدے کی کسی ایک بھی شق پر عمل نہیں ہو سکا۔

یاد رہے کہ ’’العربیہ‘‘ کے نامہ نگار نے اپنے ایک مراسلے میں بتایا تھا کہ حوثیوں نے الحدیدہ بندرگاہ کا کںڑول اپنے کوسٹ گارڈ جنگجوؤں کے حوالے کیا ہے، جسے یمنی حکومت نے ایک ’’نیا ڈراما‘‘ قرار دیا۔

الحدیدہ کے گورنر الحسن طاہر نے ’’العربیہ‘‘ کو بتایا کہ حوثی الحدیدہ، الصلیف اور راس عیسیٰ کی بندرگاہوں کی حوالگی کا ڈراما رچا رہے۔ حوالگی سے متعلق طے پانے والے پروٹوکول کے علی الرغم اس ساری کارروائی سے یمنی حکومت اور اقوام متحدہ سبہی بے خبر ہیں۔

یمنی وزیر اطلاعات معمر الاریانی نے ہفتے کے روز ایک بیان میں کہا کہ الحدیدہ بندرگاہ سے حوثیوں کے انخلا کو ’’ڈراما‘‘ قرار دیا جانا دراصل بین الاقوامی برادری کا قد چھوٹا کرنے کے مترادف ہے۔

برطانوی خبر رساں ادارے ’’رائیٹرز‘‘ سے بات کرتے ہوئے الاریانی کا کہنا تھا کہ جو کچھ ہوا وہ سرعام سٹیج کیا گیا ڈراما تھا جس میں سادہ کپڑوں میں حوثی باغی الحدیدہ سے نکل کر دوبارہ کوسٹ گارڈ کی وردی پہن کر براجمان ہو گئے۔ ساری کارروائی کا مقصد بین الاقوامی برادری کی آنکھوں میں دھول جھونک کر یہ باور کرانا تھا کہ حوثی تو امن کے لیے سنجیدہ ہیں۔