خلیج میں دہشت گردی کا ہدف تیل کی عالمی سپلائی ہے : سعودی عرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کا کہنا ہے کہ خلیج اور تیل کے پمپنگ اسٹیشنوں کے خلاف دہشت گرد کارروائیوں کا مقصد دنیا بھر میں تیل کی سپلائی کو نشانہ بنانا ہے۔

سعودی کابینہ نے منگل کے روز اپنے اجلاس میں کہا کہ "حال ہی میں خلیج عربی میں ہونے والی تخریب کاری میں مملکت کو نشانہ نہیں بنایا گیا بلکہ یقینا دنیا کے لیے توانائی کی سپلائی کی سیکورٹی اور عالمی معیشت کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی SPA کے مطابق کابینہ نے ایران نواز حوثی ملیشیا سمیت ایسے تمام دہشت گرد فریقوں پر روک لگانے کی اہمیت پر زور دیا جو اس طرح کی تخریبی کارروائیاں انجام دے رہی ہیں"۔

سعودی عرب میں اسٹیٹ سیکورٹی کی پریذیڈنسی کے سیکورٹی ترجمان نے گزشتہ روز منگل کو اعلان کیا تھا کہ دوادمی اور عفیف کے ضلعوں میں ارامکو کمپنی کے زیر انتظام پٹرول کے دو پمپمنگ اسٹیشنوں کو محدود صورت میں نشانہ بنایا گیا۔ ترجمان کے مطابق یہ کارروائی منگل کی صبح چھ سے ساڑھے چھ بجے کے درمیان کی گئی۔

ادھر سعودی عرب کے توانائی، صںعت اور معدنی دولت کے وزیر انجینئر خالد الفالح کے مطابق مذکورہ دونوں حملے ڈرون طیارہ بموں کے ذریعے کیے گئے۔ اس کے نتیجے میں اسٹیشن نمبر 8 میں آگ بھڑک اٹھی جس پر قابو پا لیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں