.

سعودی عرب اور امارات کی یمن میں اساتذہ کی بحالی کے لیے70 ملین ڈالر کی امداد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات نے مشترکہ طور پریمن میں اساتذہ کی بحالی کے پروگرام کے لیے 70 ملین ڈالر کی خطیر رقم فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے۔ یہ رقم اساتذہ کی تنخواہوں کی ادائی اور اساتذہ کی دیگر ضروریات پرصرف کی جائےگی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی عرب اور امارات کی طرف سے یمن میں تعلیمی اور تدریسی عمل کے تسلسل کے لیے اساتذہ کی مالی مدد جاری رکھنےکےعزم کا اعادہ کیا ہے۔ یمن میں اساتذہ کی بہبود اور تعلیمی عمل جاری رکھنے میں اقوام متحدہ کے ادارہ برائے اطفال 'یونیسیف' کی طرف سے بھی بھرپور تعاون فراہم کیا گیا ہے۔

شاہ سلمان ریلیف سینٹر کے جنرل سپروائزراور شاہی دیوان کے مشیر ڈاکٹر عبداللہ بن عبدالعزیز الربیعہ، متحدہ عرب امارات کی وزارت خارجہ اور عالمی تعاون کے معاون خصوصی سلطان محمد الشامسی اور خلیجی ملکوں میں یونیسیف کے مندوب الطیب آدم نے یمن میں اساتذہ کی بہبود کےپروگرام پر دستخط کیے۔ اس پروگرام کے تحت یمنی اساتذہ اور تعلیمی شعبے سے منسلک دیگرملازمین کی بحالی کے لیے سعودی عرب کی طرف سے 35 اور امارات کی طرف سے بھی 35 ملین ڈالر کی نقد امداد فراہم کرنے کا اعلان کیا گیا۔

اس پروگرام سے یمن کی اب، دارالحکومت سیکرٹریٹ، البیضاء، حجۃ،ذمار، صعدہ، عمران، المحویت اور ریمہ شہروں میں ایک لاکھ 36 ہزار 799 افراد مستفید ہوں گے۔ اس موقع پر یونیسیف کے عہدیدار الطیب آدم نے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی طرف سے یمن میں اساتذہ کی بہبود کے لیے خطیررقم منظورکرنے پردونوں ملکوں کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں‌ نے کہا کہ رقم سے یمن کے ایک لاکھ 30 ہزار اساتذہ کو ماہانہ تنخواہیں دی جا سکیں گی۔ اس کے علاوہ امدادی پروگرام سے 37 لاکھ یمنی طلباء کو اپنی تعلیم جاری رکھنے کا موقع ملے گا۔