.

صنعاء میں حوثیوں کے عسکری اہداف کے خلاف عرب اتحاد کا آپریشن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد نے جمعرات کے روز صنعاء میں حوثی ملیشیا کے عسکری اہداف کو نشانہ بنانے کے لیے ایک آپریشن کے آغاز کا اعلان کیا ہے۔

اس دوران ہونے والے فضائی حملوں میں صنعاء میں جبل عطان میں باغیوں کے ہتھیاروں کے گودام اور ٹھکانے بھی لپیٹ میں آئے۔

عرب اتحاد کے مطابق نشانہ بنانے کی کارروائی بین الاقوامی قانون سے موافقت رکھتی ہے اور شہریوں کے تحفظ کے لیے تمام اقدامات کر لیے گئے۔ عرب اتحاد نے باور کرایا کہ علاقائی اور بین الاقوامی امن کے تحفظ کے لیے دہشت گرد تنظیموں کے خلاف اس کی کوششیں جاری ہیں۔

اس سے قبل عرب اتحاد کی مشترکہ فورسز کی کمان نے یکم مئی کو صنعاء میں واقع الدیلمی کے فضائی اڈے پر عسکری اہداف تباہ کرنے کے لیے ایک فوجی کارروائی کی تھی۔ اس دوران ڈرون طیاروں کی مرمت کے مراکز، ٹیلی کمیونی کیشن کے نظاموں اور ان کو چلانے والے غیر ملکی ماہرین اور اہل کاروں کے مقامات کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

عرب اتحاد کے سرکاری ترجمان کرنل ترکی المالکی نے واضح کیا کہ حوثیوں نے صنعاء کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کو ایک فوجی بیرک اور ڈرون طیاروں کی اڑان بھرنے کے مقام میں تبدیل کر دیا تا کہ دہشت گرد کارروائیوں پر عمل درامد کیا جا سکے۔ یہ کارروائیاں علاقائی اور بین الاقوامی امن کے لیے خطرہ ہونے کے علاوہ بین الاقوامی قانون رواجی ضوابط کی صریح خلاف ورزی ہے۔