.

ایکسن موبائل نے عراق سے اپنے غیر ملکی عملہ کا انخلا سیاسی بنا پر کیا ہے: وزیر تیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے وزیر تیل ثامر غضبان نے ملک کے جنوب میں واقع قرنہ 1 آئیل فیلڈ سے ایکسن موبائل کے اپنے غیرملکی عملہ کو واپس بلانے کے فیصلے کو ناقابلِ قبول اور بلاجواز قرار دے دیا ہے۔

انھوں نے اتوار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ایکسن موبائل کے ملازمین کو واپس بلانے کے فیصلہ کا جنوبی عراق میں واقع اس آئیل فیلڈ میں سکیورٹی کی صورت حال سے کوئی تعلق نہیں ہے بلکہ یہ فیصلہ سیاسی وجوہ کی بنا پر کیا گیا ہے‘‘۔

انھوں نے ایکسن موبائل کو ایک خط بھی لکھا ہے اور اس میں کمپنی سے کہا ہے کہ وہ فوری طور جنوبی آئیل فیلڈ پر کام پر لوٹ آئے۔وہ اسی ہفتے کمپنی کے انتظامی افسروں سے بھی ملاقات کرنے والے ہیں۔

ایکسن موبائل نے ہفتے کے روز عراق میں کام کرنے والے اپنے تمام غیرملکی عملہ کو واپس بلانے کا اعلان کیا تھا۔ عراقی حکام کے مطابق ان کی تعداد 60 کے لگ بھگ ہے۔واضح رہے کہ ایکسن موبائل عراق کی سرکاری جنوبی آئیل کمپنی کی طرف سے اس آئیل فیلڈ کو بہتر بنانے کے ایک طویل مدت کے ٹھیکے پر کام کررہی ہے۔