.

تین قبطی بھائی مصری مسلمان روزہ داروں کی افطاری میں مصروف عمل

مصر میں مسلم۔ عیسائی بھائی چارہ کا عمدہ نمونہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ماہ صیام کی روحانی اور ایمان پرور کیفیات سے نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی بھرپور لطف اندوز ہوتے ہیں۔ کئی ملکوں‌میں غیرمسلموں کی جانب سے مسلمان روزہ داروں کی خدمت کی خبریں آتی رہتی ہیں۔ مصر کی شمالی گورنری المنوفیہ کے العامرہ گائوں میں تین قبطی بھائی تین سال سے مقامی مسلمانوں کی افطاری میں پیش پیش ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق قبطی عیسائی مذہب سے تعلق رکھنے والے تین سگے بھائی رزق اللہ، عماد اور شنودہ ابراہیم رزق اللہ گذشتہ تین برسوں سے مقامی مسلمانوں کی افطاری کا اہتمام کرتے ہیں جسے وہ اپنی آنجہانی والدہ کے لیے صدقیہ جاریہ قراردیتے ہیں۔

اس گائوں میں 300 مسلمان مرد روزہ دار ہیں جن میں سے بیشتر قبطی بھائیوں کےافطار دستر خوان پر افطاری میں شرکت کرتے ہیں۔ مصر میں مسلمانوں اور عیسائیوں کےدرمیان بھائی چارے اور محبت کی یہ ایک عمدہ مثال ہے۔

Egypt: Qubti Brothers in Aftar party

شنودہ ابراہیم نے 'العربیہ ڈاٹ نیٹ' سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ان کے دادا کے گائوں کے تمام خاندانوں کے ساتھ محبت سے بھرپور تعلقات رہے ہیں۔ انہوں‌ نے گائوں کے مسلمانوں اور عیسائیوں میں کبھی کوئی تفریق محسوس نہیں کی۔آج بھی منوفیہ کے باشندے ایک کنبے اور خاندان کی حیثیت سے رہتےہیں.

شنودہ نے کہا کہ ان کی ماں کی وفات سے گائوں میں کوئی شخص ایسا نہیں جس نے ان کے ساتھ ہمدردی نہ کی ہو۔ گائوں کےمسلمان روزہ داروں کی افطاری کا سلسلہ تین سال سے جاری ہے اور ہم اسے اپنی ماں کے لیے صدقہ جاریہ سمجھتے ہیں۔

Egypt: Qubti Brothers in Aftar party

شنودہ کا کہنا تھا کہ ماہ صیام کےپہلے اور دوسرے جمعہ کی افطاری میں انہوں‌ نے گائوں کے 250 سے 300 روزہ داروں کو افطاری کی دعوت دی ۔ان کی افطاری کی دعوت میں مسلمان بڑھ چڑھ کر شرکت کرتے ہیں۔