.

حوثی ملیشیا نے نجران میں ایک شہری مقام کو نشانہ بنانے کی کوشش کی : عرب اتحاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کی فورسز کے سرکاری ترجمان کرنل ترکی المالکی نے اعلان کیا ہے کہ دہشت گرد حوثی ملیشیا نے سعودی عرب کے شہر نجران میں دھماکہ خیز مواد کے حامل ڈرون طیارے کے ذریعے ایک اہم تنصیب کو نشانہ بنانے کی کوشش کی ہے۔ اس مقام کو سعودی شہری اور غیر ملکی مقیم افراد استعمال کرتے ہیں۔

المالکی نے منگل کے روز اپنے بیان میں کہا کہ ایران کی حمایت یافتہ ملیشیا نے دہشت گرد کارروائیوں کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے جو علاقائی اور بین الاقوامی امن کے لیے ایک حقیقی خطرہ ہے۔ حوثی باغی شہری مقامات اور تنصیبات کو نشانہ بنا رہے ہیں اور اس طرح مقامی شہری اور ہر شہریت کے حامل مقیم افراد ان کے نشانے پر ہیں۔

ترجمان نے حوثی ملیشیا کو شہری تنصیبات اور شہریوں کو نشانہ بنانے کی کوشش سے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ "اس حوالے سے سخت جواب دیا جائے گا اور مشترکہ فورسز کی کمان تمام تر جوابی اقدامات کرے گی۔ یہ اقدامات بین الاقوامی اور انسانی قانون کے مطابق اور عُرف میں رائج ضوابط کے تحت ہوں گے"۔

سعودی فضائی دفاعی فورسز نے پیر کو علی الصبح دو بیلسٹک میزائلوں کا راستہ روک دیا تھا۔ ان میں پہلا طائف شہر کے اوپر اور دوسرا جدہ شہر کے اوپر تباہ کیا گیا۔