.

ایرانی پاسداران انقلاب حوثی ملیشیا کو اعلیٰ جنگی صلاحیت مہیا کررہے ہیں: کرنل المالکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کی عمل داری کی بحالی میں مددگار عرب فوجی اتحاد نے الزام لگایا ہے کہ ایران کی سپاہ پاسداران انقلاب حوثی باغیوں کو بیلسٹک میزائل اور بغیر پائیلٹ والے جاسوسی طیاروں کی صورت میں عمدہ درجے کے جنگی وسائل مہیا کر رہی ہے جنہیں بروئے کار لاتے ہوئے حوثی حملہ آور سعودی عرب کے اندر اہداف کو نشانہ بنا رہے ہیں۔

عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو منگل کی شب ایک انٹرویو میں بتایا کہ ’’حوثی ملیشیا کے پاس اعلی درجے کی جنگی صلاحیت ہے۔ ایسی صلاحیت دنیا میں کسی ملیشیا کے پاس نہیں ہوتی‘‘۔ان کا اشارہ بیلسٹک میزائلوں اور بغیر پائیلٹ جاسوسی طیاروں کی جانب تھا۔

پاسداران انقلاب کا ملوث ہونا

ایک سوال کے جواب میں کرنل المالکی کا کہنا تھا کہ ’’ہم بیلسٹک میزائلوں سے الریاض شہر اور حوثیوں کی طرف سے سعودی عرب کے دوسرے علاقوں کو ایرانی میزائلوں سے نشانہ بنانے کی کوششوں کا ذکر کر رہے ہیں۔‘‘ ان کا مزید کہنا تھا کہ حوثی ملیشیا کے پاس یہ میزائل پہلے نہیں تھے۔عرب اتحاد کے ماہرین نے گرائے جانے والے ڈرونز اور بیلسٹک میزائلوں کے ٹکروں کا بغور جائزہ لیا ہے جس سے یہ بات پایہ ثبوت کو پہنچی ہے کہ ایرانی سپاہ پاسداران انقلاب کی طرف سے حوثیوں کو یہ صلاحیت فراہم کی جا رہی ہے۔

قبل ازیں کرنل ترکی المالکی نے ’’العربیہ‘‘ نیوز چینل سے بات کرتے ہوئے خبردار کیا تھا کہ حوثی ملیشیا کا خطرہ بڑھتا جا رہا ہے اور یہ گروپ علاقائی امن وامان کو غیر مستحکم بنا رہا ہے۔ انھوں نے کہا کہ حوثی ملیشیا کو ایرانی پاسداران انقلاب سے احکامات موصول ہوتے ہیں اور دہشت گرد کارروائیوں پر عمل درامد کے حوالے سے ملیشیا کو خود فیصلے کا اختیار نہیں ہے۔

اس سے قبل منگل کے روز المالکی نے یہ اطلاع دی تھی کہ دہشت گرد حوثی ملیشیا نے سعودی عرب کے شہر نجران میں دھماکا خیز مواد کے حامل ڈرون طیارے کے ذریعے ایک اہم تنصیب کو نشانہ بنانے کی کوشش کی۔ اس مقام کو سعودی شہری اور غیر ملکی مقیم افراد استعمال کرتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ایران کی حمایت یافتہ ملیشیا نے دہشت گرد کارروائیوں کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے جو علاقائی اور بین الاقوامی امن کے لیے ایک حقیقی خطرہ ہے۔ حوثی باغی شہری مقامات اور تنصیبات کو نشانہ بنا رہے ہیں اور اس طرح مقامی شہری اور ہر شہریت کے حامل مقیم افراد ان کے نشانے پر ہیں۔

سعودی ائر ٖڈیفنس فورس نے پیر کو علی الصباح دو بیلسٹک میزائلوں کو فضا میں کارروائی کرتے ہویے تباہ کیا تھا۔ ان میں پہلا طائف شہر کے اوپر اور دوسرا جدہ شہر کی فضائی حدود میں تباہ کیا گیا۔

یاد رہے کہ اب تک حوثی ملیشیا کی جانب سے سعودی عرب پر داغے جانے والے بیلسٹک میزائلوں کی مجموعی تعداد 227 ہو چکی ہے۔ سعودی فضائی دفاعی افواج نے ان تمام میزائلوں کو فضا میں تباہ کر دیا۔