.

رمضان میں نجران کی یہ سعودی مصنوعات خصوصی توجہ کا مرکز کیوں ہوتی ہیں ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے شہر نجران میں ہر سال مقامی افراد رمضان مبارک کے دوران مختلف قسم کی قومی ورثے اور آثار سے متعلق اشیاء اور سامان کی خریداری کے لیے عوامی بازاروں کا رخ کرتے ہیں۔ مقامی طور پر ہاتھوں سے تیار کی گئی ان اشیاء کا سب سے بڑا مرکز نجران کے مغربی علاقے ابا السعود میں تاریخی محل کے اطراف واقع بازار کی دکانیں ہیں۔

سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی SPA کی رپورٹ کے مطابق مذکورہ بازار میں متعلقہ اشیاء کی دکانوں پر پتھر سے بنی مصنوعات کو نمایاں حیثیت حاصل ہے۔ مقامی افراد نئے طرز کے باورچی خانوں کے لیے اب بھی ان کی خریداری کرتے ہیں۔ عیدین اور دوسرے مواقع پر کھانا پکانے، پیش کرنے اور محفوظ کرنے کے واسطے پتھروں اور مٹی سے بنے ان برتنوں کا استعمال کیا جاتا ہے۔ مختلف حجم کے یہ برتن اعلی ترین معیار کے ہوتے ہیں۔

ان قدیم برتنوں میں رمضان میں سب سے زیادہ فروخت ہونے والا برتن "المدهن" ہے۔ اس برتن میں ماہ رمضان کے لیے نجران کے دسترخوان کا اہم پکوان "الرقش" تیار کیا جاتا ہے۔

اس کے علاوہ روٹی کو رکھنے کے لیے بھی مختلف رنگوں کی دستی مصنوعات موجود ہوتی ہیں۔

ان دکانوں پر جانوروں کی کھالوں سے تیار کی گئی مصنوعات بھی ہوتی ہیں۔ مصنوعات کی تیاری سے قبل ان کھالوں کو دباغی کے ذریعے چمڑے میں تبدیل کیا جاتا ہے۔ ان میں "الميزب" ایک اہم ضرورت ہے۔ یہ شیرخوار بچوں کو اٹھانے کا آلہ ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ "المسبت" جو کمر کے گرد باندھنے کی چمڑے کی بیلٹ ہوتی ہے ، "القطف" یہ قہوہ کو محفوظ رکھنے کے لیے استعمال ہوتا ہے اور "المشراب" جو چمڑے کا برتن ہوتا ہے اور اس میں پانی محفوظ کیا جتا ہے۔ ان کے علاوہ مختلف قسم کی لکڑی کی مصنوعات اور زیورات بھی علاقے کے لوگوں کے لیے کشش کا باعث ہوتے ہیں۔

نجران میں ابا السعود میں واقع یہ تاریخی علاقہ تاریخی ، ثقافتی اور سیاحتی اہمیت کا حامل ہے جو قومی ورثے کی عکاسی کرتا ہے۔