یمنی فوج نے الضالع میں مزید علاقے حوثی قبضے سے آزاد کرا لیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

یمن میں سرکاری فوج نے جمعرات کے روز جنوبی صوبے الضالع میں نئے علاقوں کو آزاد کرا لیا۔ ضلع قعطبہ کے شمالی اور مغربی حصوں میں ہونے والی اس پیش رفت میں یمنی فوج کو عوامی مزاحمت کاروں اور عرب اتحاد کی معاونت بھی حاصل تھی۔

فوجی ذرائع کے مطابق حوثی ملیشیا کے ساتھ گھمسان کی لڑائی کے بعد آزاد کرائے جانے والے اہم ترین علاقوں میں شخب القفلہ، باب غلق، جبل صامح اور جبل قصبۃ الدار شامل ہیں۔

ذرائع نے باور کرایا کہ قعطبہ شہر سے حوثی ملیشیا کا قلع قمع کرنے کے بعد یمنی فوج اور عوامی مزاحمت کاروں کی العود کے علاقوں کی جانب پیش قدمی کا سلسلہ جاری ہے۔

ذرائع کے مطابق الضالع صوبے میں یمنی فوج اور عوامی مزاحمت کاروں کی کامیابیوں نے حوثی ملیشیا کو بوکھلا دیا ہے اور باغیوں کو بھاری جانی اور مادی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

ادھر یمنی فوج نے بتایا ہے کہ اس نے الضالع صوبے کے شمال مغرب میں باجہ کے علاقے میں حوثی ملیشیا کا ایک ڈرون جاسوس طیارہ مار گرایا۔ یمنی فوج کی سرکاری ویب سائٹ کے مطابق طیارے کے ملبے کا معائنہ کرنے کے بعد معلوم ہوا کہ یہ ایرانی ساخت کا ہے۔

یمن کی مسلح افواج کے میڈیا سینٹر نے الضالع صوبے کے ضلع قعطبہ میں حوثی ملیشیا کے خلاف معرکوں سے متعلق ایک وڈیو کلپ بھی جاری کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں