.

مصر میں شدید گرمی سے روزہ داروں کو مشکلات، ہسپتالوں میں ہنگامی صورتحال

روزہ داروں کو دھوپ سے بچنے اور احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے مختلف شہروں میں گرمی کی شدت میں اضافہ ہو رہا ہے۔ مختلف علاقوں میں ریکارڈ کئے جانے والا درجہ حرارت 45 اور بعض مقامات پر 46 درجے سینٹی گریڈ رہا جس کے باعث ماہ صیام میں روزہ داروں کو شدید نوعیت کی مشکلات کا سامنا ہے۔

جزیرۃ العرب سےآنے والی گرمی کی لہر اور سوڈان کی طرف سے ہوا کے دبائو میں کمی کے باعث درجہ حرارت میں مزید اضافے کی پیش گوئی کی گئی ہے۔ شدید گرمی کے باعث مصر کے بیشتر شہروں کے اسپتالوں میں‌ ہنگامی حالت نافذ کی گئی ہے۔ گذشتہ روز وادی الجدید کے علاقے میں درجہ حرارت 46 درجے سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔ شدید گرمی کی وجہ سے کئی افراد بے ہوش ہو گئے اور انہیں اسپتالوں میں منتقل کیا گیا۔

شدید گرمی کی وجہ سے ملک کے مختلف اسپتالوں‌ میں ہنگامی حالت نافذ کی گئی ہے۔ ماہرین صحت نے شہریوں کو دن کے اوقات میں سورج کی تمازت سے بچنے کےلیے احتیاطی تدابیر اختیار کرنے پر زور دیا ہے۔ پیٹ کی بیماریوں کے ماہر ڈاکٹر محمد مخلوف نے العربیہ ڈاٹ‌ نیٹ‌ سے بات کرتےطہوئے کہا کہ شہریوں کو چاہیے ک وہ سورج کی شعاعوں سے حتیٰ الامکان بچنے کی کوشش کریں۔ روزہ رکھنے والے افراد سحری اور افطاری میں پانی کا وافر استعمال کریں۔

ان کا کہنا ہے کہ جسم کا درجہ حرارت 40 درجے کےقریب پہنچنے کے بعد فشسار خون کم ، خشکی زیادہ اور حرکت قلب بڑھ جاتی ہے۔ اس کے نتیجے جسمانی اعضاء وجوارح میں عدم توازن پیدا ہوتا ہے۔