.

فائز السراج لیبیا میں کسی امن عمل میں شریک نہیں ہوں گے : المسماری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کی فوج کے ترجمان میجر جنرل احمد المسماری نے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ لیبیا کے عوام کی سیکورٹی کے کھاتے میں فائز السراج اور شدت پسند جماعتوں کے حق میں جانب داری کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔

المسماری نے باور کرایا کہ لیبیا کی فوج کے خلاف لڑائی کے بعد فائز السراج لیبیا میں کسی امن عمل میں شریک نہیں ہوں گے۔

ترجمان نے تصدیق کی کہ لیبیا کی فوج کی جنرل کمان نے ہشام عشماوی اور ایک اور دہشت گرد کو مصر کے حوالے کر دیا ہے۔ یہ حوالگی دونوں ملکوں کے درمیان سمجھوتوں کی بنیاد پر عمل میں آئی۔ انہوں نے کہا کہ تحقیقات کے نتیجے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ عشماوی غیر ملکی انٹیلی جنس اداروں کے ساتھ ملوث ہے۔

بدھ کے روز لیبیا کی قومی فوج کی جنرل کمان کے ذرائع نے انکشاف کیا تھا کہ مصر کے حوالے کیے جانے والے عشماوی نے پوچھ گچھ کے دوران اہم معلومات اور شواہد فراہم کیے جن سے اس کے دہشت گرد عناصر کے ساتھ تعلقات کی تصدیق ہوتی ہے۔

ذرائع کے مطابق عشماوی نے اعتراف کیا کہ اُس کے "لیبیا کی معروف شخصیات" اور غیر ملکی عناصر کے ساتھ تعلقات ہیں جو لیبیا اور مصر میں تنظیمیں بنانے اور ان کی فنڈنگ میں ملوث ہیں۔

لیبیا نے ہشام عشماوی کو منگل کی شب سرکاری طور پر مصر کے حوالے کیا تھا۔ عشماوی دہشت گردی کے مقدمات کے سلسلے میں ایک اہم ترین مطلوب تھا۔