.

ایران ملیشیاؤں کے بیج بو رہا ہے، اس کے اقدامات ریاست جیسے نہیں: الجبیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وزیر مملکت برائے خارجہ امور عادل الجبیر نے باور کرایا ہے کہ جمعے کی شب مکہ مکرمہ میں ہونے والے اسلامی سربراہ اجلاس نے ایرانی کارستانیوں کی مذمت کی ہے اور اس کا پیغام واضح ہے۔

الجبیر کے مطابق ایران کے تصرفات اس ریاست جیسے نہیں ہیں جو احترام حاصل کرنا چاہتی ہو بلکہ ایران تو ملیشیاؤں کو پران چڑھاتا ہے اور سفارت خانوں کو دھماکوں سے اڑاتا ہے اور یہ ریاستوں کا اسلوب نہیں ہے۔

مکہ مکرمہ میں رات گئے اسلامی سربراہ اجلاس کے اختتام کے بعد ہفتے کو ایک پریس کانفرنس میں سعودی وزیر مملکت نے کہا کہ سعودی عرب دو روز میں 3 سربراہ اجلاس کی میزبانی میں کامیاب رہا جس کے لیے تمام اداروں نے بہت بڑی کاوش کی۔

الجبیر کے مطابق عالم اسلام قدرتی وسائل اور صلاحیتوں سے مالا مال ہے لہذا ان سے فائدہ اٹھا کر معیار زندگی کو بلند کیا جا سکتا ہے ،،، تاہم وجود بھی ہیں جو دہشت گردی کی سپورٹ اور فرقہ واریت پھیلانے کے واسطے کوشاں ہیں اور ایران کی طرح پڑوسی ممالک کی خود مختاری کا احترام نہیں کرتے۔

انہوں نے واضح کیا کہ اسلامی سربراہ اجلاس نے باور کرایا ہے کہ مسئلہ فلسطین کا حل دو ریاستی حل اور ایسی فلسطینی ریاست کے قیام کی بنیاد پر ہے جس کا درالحکومت بیت المقدس ہو۔