.

لبنان کے شہر طرابلس میں فوجی چوکیوں پر دہشت گردوں کے بم حملے

سیکیورٹی فورسز اور شدت پسندوں کے درمیان شدید جھڑپیں اور فائرنگ کا تبادلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنانی حکام کا کہنا ہے کہ سوموار کے روز طرابلس شہر میں 9 شدت پسندوں‌ پر مشتمل ایک گروپ نے سیکیورٹی فورسز کی چیک پوسٹوں اور گاڑیوں پر بم حملے کیے جس کے بعد فوج اور شدت پسندوں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ بھی ہوا۔

'العربیہ' اور 'الحدث' نیوز چینلز کے مطابق 9 رکنی شدت پسند گروپ نے طرابلس کے وسط میں متعدد چوکیوں‌ پر بم پھینکے۔ لبنانی فوج کا کہنا ہے کہ شدت پسند فائرنگ کرتے سڑکوں‌ پر نکل آئے۔

دہشت گردوں کے ساتھ تصادم میں ایک فوجی ہلاک اور چار سیکیورٹی اہلکار زخمی ہوئے ہیں۔ تین اہلکار گاڑیوں پر بم حملوں میں زخمی ہوئے۔ جب کہ فوج کی جوابی کارروائی میں متعدد جنگجوئوں‌ کے ہلاک اور زخمی ہونے کی بھی اطلاعات ہیں۔

ادھر طرابلس میں فوج اور شدت پسندوں‌ کے درمیان جھڑپ کے بعد فوج نے شہر میں موجود عسکریت پسندوں کے ٹھکانے کو گھیرے میں لے لیا ہے۔ مکان میں موجود 6 عسکریت پسندوں کے علاوہ یرغمالیوں کی موجودگی کا بھی خدشہ ہے۔ اطلاعات کے مطابق عسکریت پسند گروپ کو داعش کے سیل کا کمانڈر عبدالرحمان کمانڈ کر رہا ہے۔

واقعے کے فوری بعد طرابلس کی بندرگاہ اور دیگر مقامات پر سیکیورٹی بڑھا دی گئی ہے اور فوج اور دیگر سیکیورٹی اداروں کے اہلکاروں‌ کی بڑی تعداد سڑکوں پر گشت کر رہی ہے۔ ’’العربیہ‘‘ کے نامہ نگار کے مطابق طرابلس میں لبنانی فوج اور عسکریت پسندوں کے درمیان جھڑپ جاری ہے۔