.

آئل ٹینکروں پر حملوں میں ایران کے ملوث ہونے کے الزامات کا جائزہ لے رہے ہیں: یورپی یونین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یورپی یونین نے کہا ہے کہ وہ خلیج عُمان میں دو تیل بردار جہازوں پر جمعرات کے روز ہونے والے حملوں میں‌ ایران کے ملوث ہونے کے الزامات کے حوالے سے معلومات جمع کر رہے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یورپی یونین نے خلیج عمان میں آئل ٹینکروں پر حملوں کے بعد تمام فریقین سے ضبط تحمل سے کام لینے پر زور دیا۔

ادھر برطانوی وزیر خارجہ جیریمی ہنٹ نے جمعہ کے روز ایک بیان میں کہا تھا کہ ان کے ملک کو یقین ہے کہ خلیج عُمان میں دو تیل بردار جہازوں‌ پر حملے میں ایرانی پاسداران انقلاب کا ہاتھ ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق برطانوی وزیر خارجہ نے کہا کہ جمعرات کے روز خلیج عُمان میں دو تیل بردار جہازوں پر حملے کا کسی اور ملک کو فائدہ نہیں ہوسکتا اور نہ ہی ایران کے سوا کوئی دوسرا ملک اس واقعے کا ذمہ دار ہے۔

جیریمی ہنٹ نے کہا کہ ایران ماضی میں بھی تیل بردار جہازوں‌پر حملوں میں ملوث پایا گیا ہے۔ ہماری تحقیقات اور ان کے نتائج یہ بتا رہے ہیں کہ تیل بردار جہازوں‌ پر حملوں‌ میں‌ ایرانی پاسداران انقلاب کا ہاتھ ہے۔ ایران خطے کو افراتفری کا شکار کرنا چاہتا ہے اور پورے خطے کے لیے سب سے بڑا خطرہ بن کر ابھر رہا ہے۔

برطانوی وزیر خارجہ نے ایران پر خطے کو عدم استحکام سےدوچار کرنے کی سرگرمیاں‌ فوری طور پر بند کرنے کا مطالبہ کیا۔

جمعرات کو امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے کہا تھا کہ ایرانی اقدامات غیر مسبوق حد تک خطرناک ہیں۔ ایران اشتعال انگیزی کے ذریعے عالمی امن کو تباہ کرنے پر تلا ہوا ہے۔

امریکی عہدہ دار نے ایران کے اس دعوے کو بھی مسترد کر دیا ہے جس میں اس نے کہا تھا کہ اس نے خلیج عمان میں ان دونوں جہازوں کے عملہ کو حملے کے بعد بچالیا ہے۔ امریکی عہدہ دار نے ایران کے اس دعوے کو ’’ننگا جھوٹ‘‘ قرار دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ خلیج عمان میں تیل بردار جہازوں پر حملوں‌ کے بعد ہم اپنے اور اپنے اتحادیوں کے مفادات کا تحفظ یقینی بنانے کے ساتھ عالمی تجارتی قافلوں کو ایران کی طرف سے لاحق خطرات سے تحفظ فراہم کریں‌ گے۔