.

امیرکویت کی ایران اور امریکا میں کشیدگی کم کرنے کے لیےعراقی قیادت سے بات چیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امیر کویت نے امریکا اور ایران کےدرمیان جاری کشیدگی کم کرنے کے لیے عراقی قیادت سےصلاح مشورہ شروع کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ‌ کے مطابق کل بدھ کو امیر کویت الشیخ صباح الاحمد الجابر الصباح ایک روزہ دورے پر بغداد پہنچے جہاں ان کا شاندار استقبال کیا گیا۔ انہوں‌ نے عراقی قیادت سے ملاقات میں ایران اور امریکا کے درمیان جاری کشیدگی پر بات چیت کی۔

خیال رہے کہ امریکا اور ایران کے درمیان جاری کشیدگی ختم کرنے کے لیے‌خطے کےکئی ممالک کوششیں کر رہے ہیں۔ ان میں کویت اور عراق بھی پیش پیش ہیں۔ امریکا کی جانب سے ایران کےساتھ طے پائے جوہری معاہدے سےعلاحدگی کے ایک سال بعد دونوں ملک جنگ کے دھانے پرکھڑے ہیں۔

عراقی ایوان صدر کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ امیر کویت نے صدر برھم صالح سے ملاقات کی۔ اس ملاقات میں دونوں رہ نمائوں نے دو طرفہ تعلقات، باہمی دلچسپی کے امور بالخصوص امریکا اور ایران کے درمیان جاری کشیدگی پرتبادلہ خیال کیا۔ بیان میں‌ کہا گیا ہے کہ صدر برہم صالح نے امیر کویت کو بتایا کہ ان کا ملک خطے کے وسیع تر مفاد میں امریکا اور ایران کے درمیان جاری کشیدگی کم کرنے کے لیے کوششیں جاری رکھےگا۔ ان کا کہنا تھا کہ عراق پڑوسی ملکوں‌کےساتھ بات چیت اور اچھے ہمسائے کی حیثیت سے اپنی خدمات جاری رکھے گا۔

اس موقع پر امیر کویت الشیخ الصباح نے کہا کہ کویت اس بات یریقین رکھتا ہےکہ خطے کی امن وسلامتی عراق کی امن وسلامتی اور استحکام سے مشروط ہے۔ دونوں‌رہ نمائوں‌نے دو طرفہ تجارتی روابط بڑھانے اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ایک دوسرے کی معاونت جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا۔ دونوں‌رہ نمائوں نے امریکا اور ایران پر ضبط وتحمل سے کام لینے اور جنگ سے گریز پر زور دیا۔