.

سعودی فضائی کمپنی نے آبنائے ہرمزاور خلیج عُمان کے فضائی روٹ تبدیل کردیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

'العربیہ' چینل کے نامہ نگار نے خبر دی ہے کہ سعودی عرب کی سرکاری فضائی کمپنی نے اپنی پروازوں کو خلیج عُمان اور آبنائے ہرمز کے فضائی راستے استعمال کرنےسے روکتے ہوئے متبادل روٹس کے استعمال کا فیصلہ کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی فضائی کمپنی کی طرف سے یہ اقدام مسافروں کے تحفظ اور سلامتی کے لیےاٹھایا ہے۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ ایشیائی ملکوں‌ کے لیے چلائی جانے وال پروازوں کو خلیج عرب کی فضاء‌میں متبادل راستوں کے استعمال کی ہدایت کی گئی ہے۔ مسافروں کے تحفظ کے لیے سعودی ایئرلائن کی کوئی پرواز آبنائے ہرمز اور بحر عُمان کی فضائی حدود کو استعمال نہیں‌کرےگی۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ روٹ تبدیل ہونے سے پروازوں کی آمد ورفت کے اوقات بھی متاثر ہوسکتےہیں۔

خیال رہے کہ جمعہ کے روز متعدد عالمی فضائی کمپنیوں‌نے بھی احتیاطی تدابیر کے تحت آبنائے ہرمز کی فضائی حدود کو استعمال نہ کرنے کافیصلہ کیا تھا۔ یہ پیش رفت بین الاقوامی فضائی حدود میں امریکی فوجی ڈرون مار گرائے جانے کے ایرانی اقدام کے بعد سامنے آئی ہے۔

امریکی ڈرون طیارے کو ایران کی طرف سے نشانہ بنائے جانے کے واقعہ کے بعد متعدد بین الاقوامی فضائی کمپنیوں نے اپنے جہازوں کو ایران کی فضائی حدود سے گزرنے سے منع کر دیا ہے

خلیج کی بڑی فضائی کمپنی اتحاد ایئر لائنز نے بھی اپنے طیاروں کو آبنائے ہرمز اور خلیج عُمان کے اوپر سے گزرنے سے روک دیا ہے۔

ایران کی سول ایویشن اتھارٹی نے کہا ہے کہ ایران کی فضائی حدود مکمل طور پر محفوظ ہیں۔

امریکی ڈرون طیارے کے مار گرائے جانے کے بعد سے امریکا کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے ایران کو دھمکیاں دینے کا سلسلہ جاری ہے۔ دوسرے طرف ایران بھی ان دھمکیوں کا ترکی بہ ترکی جواب دے رہا ہے۔

اسی دوران امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران کے اندر تین اہداف کو نشانہ بنانے کا حکم بھی دے دیا تھا لیکن اس کو آخر لمحے میں خود ہی واپس لے لیا۔