.

عرب لیگ کا فلسطینی اتھارٹی کو ہر ماہ 10 کروڑ ڈالر کی امداد دینے کا وعدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عرب لیگ نے ایک مرتبہ پھر مالی مسائل سے دوچارفلسطینی اتھارٹی کو ہر ماہ 10 کروڑ ڈالر امدادکے طور پر دینے کا وعدہ کیا ہے۔

عرب لیگ نے قبل ازیں اپریل میں فلسطینی اتھارٹی کومالی بوجھ سے نجات دلانے کے لیے 10 کروڑ ڈالر ماہانہ دینے کا وعدہ کیا تھا ۔عرب لیگ کے رکن ممالک کے وزرائے خزانہ نے اتوار کو اپنے اجلاس میں اس وعدے کی تجدید کی ہے۔فلسطینی اتھارٹی اسرائیل کی جانب سے محصولات کی مد میں اکٹھی کی گئی رقم نہ ملنے کی وجہ سے مالی مسائل سے دوچار ہوچکی ہے۔

اس سے ایک روز قبل ہی امریکا نے یہ اعلان کیا تھا کہ وہ آیندہ ہفتے بحرین کے دارالحکومت منامہ میں ہونے والی کانفرنس میں اپنا مجوزہ مشرقِ اوسط امن منصوبہ پیش کرے گا۔اس کے تحت مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں سرمایہ کاری کی غرض سے 50 ارب ڈالر سے زیادہ جمع ہونے کی امید باندھی گئی ہے ۔ اسرائیلی فوج کے محاصرے کا شکار غزہ کی پٹی اور مغربی کنارے میں معاشی سرگرمیوں کے فروغ اور غیرملکی سرمایہ کاری سے فلسطینیوں کے لیے ایک عشرے میں دس لاکھ سے زیادہ ملازمتوں کے مواقع پیدا ہوں گے۔

واضح رہے کہ اس وقت اسرائیل فلسطینی اتھارٹی کی جانب سے ٹیکس جمع کرتا ہے لیکن اس نے فروری میں محصولات کی مد میں جمع شدہ 13 کروڑ 80 لاکھ ڈالر کی رقم دینے سے انکار کردیا تھا اور یہ رقم اسرائیلی جیلوں میں قید فلسطینی سیاسی قیدیوں کے نام پر روک لی تھی۔اس کے بعد عرب لیگ نے فلسطینی اتھارٹی کو مالی امداد دینے کا اعلان کیا تھا۔