.

امریکا نے ابھا ایئرپورٹ پر حملے کو "بزدلانہ کارروائی "قرار دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں امریکی سفیر جان ابی زید کا کہنا ہے کہ امریکا ابھا ایئرپورٹ پر حوثیوں کے حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتا ہے۔

امریکی سفیر نے کہا کہ ہوائی اڈے کو نشانہ بنانا شہریوں کے خلاف بزدلانہ اور قبیح حملہ ہے۔ انہوں نے حملے کا نشانہ بننے والے افراد کے اہل خانہ سے تعزیت کا اظہار کیا اور زخمیوں کے لیے جلد صحت یابی کی دعا کی۔

یمن میں آئینی حکومت کے حامی عرب اتحاد کی فورسز کے سرکاری ترجمان کرنل ترکی المالکی نے پیر کو علی الصبح اعلان کیا کہ اتوار کی شب مقامی وقت کے مطابق 9:10 پر ایران نواز حوثی ملیشیا نے ابھا کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر ایک دہشت گرد حملہ کیا۔ اس ہوائی اڈے کو روزانہ ہزاروں افراد استعمال کرتے ہیں جن میں سعودی شہری اور غیر ملکی مقیم شامل ہیں۔

المالکی کے مطابق دہشت گردی کی اس کارروائی میں ایک شامی شہری جاں بحق اور مختلف ملکوں سے تعلق رکھنے والے 21 افراد زخمی ہوئے۔ زخمیوں میں 13 سعودی، 4 بھارتی، 2 مصری اور 2 بنگلہ دیشی شہری شامل ہیں۔ زخمیوں میں 3 خواتین (ایک مصری اور دو سعودی) اور 2 بھارتی بچے بھی ہیں۔ تمام زخمیوں کو فوری طور پر علاج کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔

زخمیوں میں 13 کو معمولی اور 3 کو درمیانے درجے کے زخم آئے جب کہ 2 کی حالت تشویش ناک ہے۔ حملے میں ایئرپورٹ پر واقع (میکڈونلڈز) ریستوران کے شیشے ٹوٹ گئے جبکہ 18 گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچا۔