.

شام: اِدلب میں مارٹر گولوں کا حملہ، ایک ترک فوجی ہلاک اور تین زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ جمعرات کے روز شام کے صوبے ادلب میں نگرانی کے ایک ٹھکانے پر مارٹر گولوں کے حملے میں ایک ترک فوجی ہلاک اور تین زخمی ہو گئے۔

وزارت دفاع کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ یہ حملہ شامی حکومت کے زیر کنٹرول اراضی سے کیا گیا۔ بیان میں اس کارروائی کو "دانستہ حملہ " قرار دیا گیا ہے۔

بیان کے مطابق زخمی فوجیوں کو جائے وقوع سے نکال لیا گیا اور وہ اس وقت زیر علاج ہیں۔

ترک وزارت دفاع کے مطابق اس نے حملے کے بعد انقرہ میں روسی اتاشی کو طلب کر کے انہیں آگاہ کر دیا کہ مذکورہ کارروائی کا "سختی کے ساتھ" جواب دیا جائے گا۔

اس سے پہلے بھی رواں ماہ جون میں علاقے میں ترکی کی چیک پوسٹوں کو اسی طرح کے حملوں کا نشانہ بنایا جا چکا ہے۔

گذشتہ برس بشار الاسد کی حکومت کے حامی روس اور شامی اپوزیشن کے حامی ترکی نے ادلب صوبے میں جارحیت کم کرنے کے حوالے سے ایک سمجھوتے پر اتفاق رائے کیا تھا۔

کچھ عرصہ قبل یہ سمجھوتا سبوتاژ ہو گیا جس نے لاکھوں شہریوں کو علاقے سے راہ فرار اختیار کرنے پر مجبور کر دیا۔ شام میں آٹھ سال سے جاری جنگ میں ادلب صوبہ اب شامی اپوزیشن کا واحد بقیہ گڑھ رہ گیا ہے۔