.

مصراور اردن کا فلسطینیوں کے حق خودارادیت کی حمایت کا اعادہ

اردنی وزیراعظم کی قاہرہ میں مصری صدر عبدالفتاح السیسی سے ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر اور اُردن نےفلسطینی قوم کے حق خود ارادیت کی بھرپور حمایت کرتے ہوئے فلسطین۔ اسرائیل تنازع کے دو ریاستی حل کے فارمولے کی حمایت کی ہے۔ دونوں‌ملکوں‌ کا کہنا ہے کہ وہ فلسطینیوں اور اسرائیل کے درمیان امن بات چیت کی بحالی اور قضیے کےدو ریاستی حل کی فارمولے پرعمل درآمد کے لیے کوششیں جاری رکھیں گے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق دونوں‌ملکوں‌ کی طرف سے قضیہ فلسطین کے حوالے سے تازہ موقف گذشتہ روز قاہرہ میں اردنی وزیراعظم عمر الرزاز کی مصری صدر عبدالفتاح السیسی سے ملاقات کے دوران سامنے آیا۔ دونوں رہ نمائوں نے مسئلہ فلسطین کے دو ریاستی حل کے لیے کی جانے والی مساعی کو آگے بڑھانے میں مدد فراہم کرنے کےعزم کا اعادہ کیا۔

مصری صدر اور اردنی وزیراعظم کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک فلسطینیوں اوراسرائیل کے درمیان بامقصد بات چیت کی بحالی کے لیے ہرممکن اقدامات کریں گے۔

دونوں رہ نمائوں نے شام کے مسئلے کے پرامن حل اور شامی پناہ گزینوں‌ کی واپسی کی ضرورت پرزور دیا۔

مصری ایوان صدر کےترجمان بسام راضی نے بتایا کہ صدر السیسی نے مصری حکومت اور دونوں اقوام کی سطح پر گہرے دوستانہ اور برادرانہ رشتے، تاریخی تعلقات اور خطے کے مسائل کےحوالے سے ہم آہنگی کو سراہا۔ ان کا کہنا تھا کہ مصر اور اردن کو یکساں چیلنجز کا سامنا ہے اور دونوں مُلک مُشترکہ چیلنجز سے مل کر نبرد آزماد ہوں گے۔

اس موقع پر اردنی وزیراعظم نے مصر کےساتھ رابطے، مشاورت اور اہم امور پرہم آہنگی کو مزید فروغ دینے کی ضرورت پر زور دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ مصر اور اردن خطے کے مسائل کےحل کے لیے کلیدی کردار ادا کرنے کے ساتھ عرب اقوام اور مسلم امہ کو درپیش چیلنجز کے حل میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں۔