.

'الباحہ' موسم گرما میں سعودی اور خلیجی سیاحوں کی جنت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے پرفضاء‌ مقام 'الباحہ' کو موسم گرما کے دوران نہ صرف مقامی بلکہ دیگر خلیجی ممالک کے سیاحوں کی جنت قرار دیا جاتا ہے۔ انواع واقسام کے پھولوں پر پھیلے لہلاتے باغات، دروں، گھاٹیوں، پانی کے چشموں اور دیگر قدرتی مظاہر فطرت کی بہ دولت سیاح الباحہ کی طرف کھچے چلے آتے ہیں۔

حال ہی میں الباحہ میں ہونے والی موسلا دھار بارش نے اس کی خوبصورتی کو مزید چار چاند لگا دیے۔ الباحہ سعودی عرب کے گرمائی سیاحتی مقامات میں سے ایک ہے۔ اس کی سیر وسیاحت کے لیے نہ صرف سعودی عرب کے اندر سے سیاح یہاں آتے ہیں بلکہ خلیج تعاون کونسل کے رکن ممالک کے شہری بھی بڑی تعداد میں یہاں کا رخ‌ کرتے ہیں۔ الباحہ میں کئی ایک تاریخی مقامات موجود ہیں۔ یہاں آنے والوں کو قلعے، پرانی تہذیب وتمدن کی علامات، صدیوں‌ پرانی بستیاں، وادیاں، نہریں، آبشاریں، جنگلات اور باغات سب کچھ دیکھنے کو ملتا ہے۔

موسم گرما کی تعطیلات ہوتے ہی اندرون اور بیرون ملک سے سیاح الباحہ کا رخ کرتے ہیں۔ یہاں کا معتدل موسم، لوگوں کے پیشے، دست کاریاں اور عوامی فنون بھی سیاحوں کے لیے غیر معمولی کشش رکھتے ہیں۔ الباحہ صرف سیاحتی مقام ہی نہیں بلکہ قدیم تجارتی مرکز بھی ہے، جس میں‌ موجود بعض بازار 350 سال پرانے ہیں۔ گرمی کے موسم میں الباحہ کے ہوٹلوں پر سیاحوں کا غیر معمولی رش رہتا ہے۔

قدرتی درختوں سے بھرپور کئی جنگلات اور سیرگاہیں، پہاڑوں کے درمیان گھری وادیاں، تہامہ کی پہاڑیوں‌ کے دامن میں موجود وادیاں اور جنگلات جن میں رغدان جنگلات خاص طور پر مشہور ہیں سیاحوں کی توجہ کا خاص مرکز رہتےہیں

الباحہ میں تقریبا 40 چھوٹے بڑے جنگل ہیں جن میں زیتون، صنوبر، اخروٹ، کشمش، انار، انگور اور دیگر پھل دار پودے اور درخت اور پھول دار پودے شامل ہیں۔ الباحہ کے قدرتی قابل دید پہاڑی مقامات میں سفید پتھروں کے حوالے سے مشہور تاریخی جبل العیسان، ذی معشوقہ گائوں، لغبہ روضہ بنی سید، عشم اورالصعداء شہر، الزینہ محلات، الخلف الخلیف گائوں،کئی پرانے قلعے اور پرانے وقتوں کےفن تعمیر کے نمونے شامل ہیں۔

سعودی عرب میں الباحہ کے علاقے میں مختلف نجی اداروں کے تعاون سے ایک سیاحتی مہم شروع کی گئی ہے۔ الباحہ، راحہ، السیاحہ' کے عنوان سے شروع کی گئی اس مہم کا مقصد مقامی اور غیر ملکی سیاحوں کو اس قدرتی مقام کی طرف توجہ دلانا ہے۔