.

شمالی شام میں کار بم دھماکہ، 13 افراد ہلاک، 30 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں انسانی حقوق کے گروپوں کی رپورٹس کے مطابق جمعرات کے روز ترکی کی سرحد سے متصل شمالی شہر عفرین میں ایک کار بم دھماکے کے نتیجے میں کم سے کم 13 افراد ہلاک اور 30 زخمی ہوگئے۔

شام میں انسانی حقوق کی صورت حال پرنظر رکھنے والے ادارے 'سیرین آبزرویٹری' کے مطابق یہ بم دھماکہ عفرین شہر کے داخلی راستے پر ترکی کی حمایت یافتہ ایک عسکری تنظیم کی چیک پوسٹ پر ہوا۔ دھماکے میں مرنے والے زیادہ تر عام شہری بتائے جاتے ہیں۔

ادارے کے سربراہ رامی عبدالرحمان نے 'اےایف پی' کو بتایا کہ بارود سے بھری ایک کار عفرین شہر کے داخلی راستے پر ایک قائم گاڑیوں کی چیکنگ کے لیے بنائی گئی چیک پوسٹ پر زور دار دھماکے سے پھٹ گئی۔ دھماکے کے نتیجے میں دو بچوں سمیت 8 عام شہری، چار ترک نواز جنگجو اور ایک اور شخص جس کی شناخت نہیں کی گئی ہلاک ہوگئے۔ دھماکے میں 30 افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

خیال رہے کہ شمالی شام کا عفرین شہر ترکی کی سرحد پر واقع ہے۔ گذشتہ برس یہ شہر امریکی حمایت یافتہ کرد پروٹیکشن یونٹس کے زیر انتظام تھا۔ ترکی نے اپنے حامی جنگجوئوں‌ کی مدد سے کرد ملیشیا کو وہاں سے نکال کر شہر کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں‌ لے لیا تھا۔

اگرچہ اس وقت شام میں بڑے پیمانے پر جنگ نہیں چل رہی مگر چھوٹے موٹے بم دھماکے اب بھی ملک میں اب بھی بدامنی کا باعث ہیں۔

جون میں ترکی کے حمایت یافتہ ایک دوسرے گروپ کے زیرا نتظام اعزاز شہر میں بارود سے بھری کار کے ذریعے دھماکہ کیا گیا جس میں کم سے کم 10 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔