.

امریکا کے ساتھ برابری کی بنیاد پر مذاکرات کے لیے تیار ہیں: حسن روحانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے صدر حسن روحانی نے آج بُدھ کو کہا ہے کہ ان کا ملک امریکا کے ساتھ برابری کی بنیاد پر مذاکرات کے لیے تیار ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر مذاکرات تہران کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کرنے کے لیے نہیں تو ہم بات چیت کے لیے تیار ہیں۔

تاہم ایرانی صدر نے یہ واضح نہیں کیا کہ ایران کس نوعیت کے مذاکرات پر آمادہ ہے؟ البتہ انہوں نے امریکا کے ساتھ مشروط مذاکرات پر آمادگی کا اشارہ دیا۔

خیال رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سنہ 2015ء کو ایران اور چھ عالمی طاقتوں کے درمیان طے پائے تاریخی جوہری معاہدے سے علاحدگی اختیار کرلی تھی تاہم امریکا کا کہنا ہے کہ وہ ایران کے ساتھ نئی شرائط پر مذاکرات کے لیے تیار ہے۔

ایرانی صدر کی ویب سائیٹ پر پوسٹ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ میں جب تک ملک کی انتظامیہ کا سربراہ ہوں اس وقت تک امریکا کے ساتھ برابری کی بنیاد پر بات چیت کی حمایت کروں گا۔ ان کا کہنا تھا کہ مذاکرات منصفانہ، برابری کی بنیاد پر، قانونی اور مسائل کے حل کےلیے خلوص کے جذبے کے تحت ہونے چاہئیں۔

صدر حسن روحانی کا کہنا تھا کہ فی الوقت ہم مذاکرات کی میز پر نہیں بیٹھ سکتے۔ ایران کو ایسے مذاکرات قبول نہیں جو ایران کو جھکنے پر مجبور کریں۔