.

ایران اور سلطنت عُمان کا آبنائے ہرمز مال بردار جہاز رانی کے تسلسل پر اتفاق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

خلیجی ریاست سلطنت عُمان کے وزیرخارجہ یوسف بن علوی نے کہا ہے کہ ایران اور عُمان نے آبنائے ہرمز میں تیل برداراور دیگر تجارتی بحری جہازوں کی آمد ورفت جای رکھنے پر اتفاق کیا ہے۔

سلطنت عُمان کے سرکاری ٹیلی ویژن چینل سے بات کرتے ہوئےوزیر خارجہ بن علوی نے کہا کہ ہم ایران اور دوسرے ممالک کے درمیان ثالثی نہیں کررہے مگر موجودہ حالات میں ہم دوسروں کی نسبت آبنائے ہرمز سے جہازوں کی آمد ورفت برقرار رکھنے میں زیادہ دلچسپی رکھتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ہم نے سب کے ساتھ رابطے برقرار رکھے ہیں۔ تمام ممالک نے موجودہ بحران سے نکلنے اور خطے کے تحفظ و استحکام کی خواہش کااظہار کیا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں یوسف بن علوی نے کہا کہ ہم دوسرے ممالک کے ساتھ مل کر خطے کے استحکام کے لیے کوششیں جاری رکھیں گے۔ کوئی بھی غلطی یا غیر ذمہ دارانہ اقدام آبی ٹریفک کی روانی متاثر کرنے کے ساتھ پوری دنیا کے لیے نقصان کاباعث بن سکتا ہے۔

ادھر ایرانی حکومت کے ترجمان علی ربیعی نے اتوار کے روز ایک بیان میں کہا تھا کہ وہ خطے کے مسائل اور اس کے تحفظ کے ویژن کے لیے دوسرے ممالک کی کوششوں کے ضمن میں عمانی وزیرخارجہ کے دورہ ایران کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ دورہ ایران اور دوسرے ممالک کے درمیان ثالثی کی کوششوں کاحصہ نہیں۔

خیال رہے کہ سلطنت عُمان کے وزیرخارجہ نے ہفتے کے روز ایران کا دورہ کیا اور اپنے ایرانی ہم منصب محمد جواد ظریف سے ملاقات کی تھی۔ دونوں وزراء خارجہ نے خلیجی ممالک اور ایران کےدرمیان جاری تنائو،امریکا اور ایران میں کشیدگی اور ایران اور یورپ کےدرمیان جاری تنازعا سمیت دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا۔