.

الحدیدہ میں دودھ فیکٹری پرحوثیوں کی گولہ باری کی شدید مذمت

یمن کا حوثی حملوں پر'یواین' سے واضح موقف اختیارکرنےکا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے وزیر برائے اطلاعات معمر الاریانی نے اقوام متحدہ کی طرف سے الحدیدہ میں جنگ بندی کی نگرانی کےلیے قائم کمیٹی پر حوثیوں کےدہشت گردانہ حملوں کو نظرانداز کرنے کا الزام عاید کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یمنی وزیر اطلاعات معمرالاریانی نے مائیکرو بلاگنگ ویب سائیٹ 'ٹویٹر' پر ایک فوٹیج پوسٹ کی ہے جس میں الحدیدہ میں اخوان ثابت صنعتی و تجارتی مرکزمیں دودھ کی فیکٹری پر حوثی باغیوں کے حملے میں ہونے والی تباہی کے مناظر دکھائے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ حوثیوں کی فیکٹری پر گولہ باری کے نتیجے میں وہاں پرکام کرنےوالا ایک ملازم جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئےتھے جب کہ فیکٹری کو غیرمعمولی نقصان پہنچا ہے۔

معمر الاریانی کا کہنا ہے کہ حوثی باغیوں کی طرف سے الحدیدہ میں روزانہ کی بنیاد پر فیکٹریوں کو حملوں کا نشانہ بنا کر سویڈن میں طے پائےجنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ حوثی شدت پسند شہری آبادی اور شہری املاک کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔ دودھ فیکٹری پرحملے کے بعد اقوام متحدہ کی جنگ بندی ٹیم کو واضح موقف اختیارکرنا چاہیے تاکہ حوثیوں کی طرف سے بے گناہ شہریوں کی جانوں سے کھیلنے کا سلسلہ بند کیا جا سکے۔