.

حوثیوں کی جانب سے آل ثابت کو نشانہ بنانے کی وجہ آئینی حکومت کی حمایت ہے : المالکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی کا کہنا ہے کہ حوثی ملیشیا نے صعدہ میں آل ثابت قبیلے کے بازار میں قتل عام برپا کیا۔ انہوں نے کہا کہ آل ثابت کو نشانہ بنائے جانے کی وجہ ان کا آئینی حکومت کے ساتھ کھڑا ہونا ہے۔

العربیہ کے ساتھ ٹیلی فونک گفتگو میں المالکی نے کہا کہ حوثی ملیشیا خلاف ورزیوں کا ارتکاب کرتی ہے اور پھر الزام آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے اتحاد پر عائد کرتی ہے .. اقوام متحدہ کی تنظیموں کو چاہیے کہ وہ یمن میں حوثیوں کے جرائم پر روشنی ڈالیں۔

المالکی کے مطابق عرب اتحاد حوثیوں کی بم باری میں زخمی ہونے والوں کو جازان منتقل کرنے کے لیے آل ثابت کے عمائدین کے ساتھ کام کر رہا ہے۔

اس سے قبل یمنی حکومت نے صعدہ صوبے کے سرحدی ضلع قطابر میں آل ثابت کے بازار پر حوثی ملیشیا کی جانب سے بم باری کی شدید مذمت کی۔ کیٹوشیا راکٹوں سے ہونے والے حملے میں کم از کم 10 شہری جاں بحق اور 20 زخمی ہوئے۔

یمنی وزیر اطلاعات معمر الاریانی کا کہنا ہے کہ حوثیوں کی جانب سے علاقے کے لوگوں کے خلاف مرتکب جرم درحقیقت اُن کے قومی مفاد پر مبنی موقف کی اجتماعی سزا ہے .. کیوں کہ آل ثابت نے حکومت کی حمایت کرتے ہوئے حوثیوں کی بغاوت کو مسترد کر دیا ہے۔ الاریانی کے مطابق حوثی ملیشیا کی جانب سے انسانیت کے خلاف جرائم کے ارتکاب کا سلسلہ جاری ہے اور ملیشیا یمنی شہریوں کے دلوں میں خوف پھیلا رہی ہے۔