.

غزہ پٹی کی سرحد پر قابض اسرائیلی فوج کے ہاتھوں ایک فلسطینی جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

العربیہ کے نمائندے کے مطابق قابض اسرائیلی فوج نے غزہ پٹی کی سرحد پر فائرنگ کر کے ایک فلسطینی کو موت کی نیند سلا دیا۔

قابض فوج کا دعوی ہے کہ مذکورہ فلسطینی نے سرحدی باڑ عبور کرنے کے بعد اسرائیلی فوجیوں پر فائرنگ کی تھی۔ اس کے نتیجے میں ایک فوجی افسر اور دو فوجی اہل کار زخمی ہو گئے۔

بعد ازاں اسرائیلی فوجی ٹینک نے غزہ پٹی میں حماس تنظیم کے ایک عسکری ٹھکانے پر گولہ باری کی۔ اسرائیلی فوج نے یہودی بستیوں میں ہائی الرٹ کا اعلان کر دیا ہے۔

مارچ 2018 میں مظاہروں اور جھڑپوں کے آغاز کے بعد سے غزہ پٹی کی سرحد پر کشیدگی نے ڈیرہ ڈالا ہوا ہے۔

اس وقت سے اب تک غزہ پٹی اور اسرائیل کے درمیان سرحدی باڑ کے علاقے میں اسرائیلی فائرنگ ، گولہ باری اور فضائی بم باری کے نتیجے میں کم از کم 297 فلسطینی اپنی جانوں سے ہاتھ دھو چکے ہیں۔

مصر اور اقوام متحدہ کی وساطت سے جنم لینے والے سکون کے بعد گذشتہ چند ماہ میں مظاہروں کی شدت میں کمی آئی ہے۔

اسرائیل نے دس برس سے حماس تنظیم کے زیر کنٹرول غزہ پٹی کا زمینی ، سمندری اور فضائی محاصرہ کر رکھا ہے۔