جواد ظریف پر کالعدم پاسداران انقلاب کے ساتھ ملی بھگت کا امریکی الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکا نے الزام عاید کیا ہے کہ ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کے ماتحت وزات خارجہ اور دہشت گرد فورس سپاہ پاسداران انقلاب ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کر رہی ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکی محکمہ خارجہ کی سائبر ٹیم کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکی وزارت خزانہ کے پاس جواد ظریف اور ان کی وزارت کے پاسداران انقلاب کے ساتھ ملی بھگت کے ٹھوس ثبوت موجود ہیں۔

امریکی سائبرٹیم کا کہنا ہے کہ ایرانی وزارت خارجہ انتخابات پر اثر انداز ہونے کی سرگرمیوں میں حصہ لیتی ہے اور پاسداران انقلاب کے مفادات کے لیے کام کرتی ہے۔ ایرانی وزارت خارجہ نے ایک دوسرے ملک کے ججوں کو رقوم دے کر القدس ملیشیا کے گرفتار جنگجوئوں کو رہا کرایا۔

خیال رہے کہ حال ہی میں امریکا نے ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کو بھی بلیک لسٹ کرتے ہوئے ان پر اقتصادی پابندیاں عاید کر دی تھیں۔ امریکی وزیر خزانہ اسٹیون منوچن کا کہنا ہے کہ جواد ظریف ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کے ایجنڈے کو آگے بڑھا رہے ہیں اور وہ دنیا میں خامنہ ای کے ترجمان ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں