شام: گولہ بارود منتقلی کے دوران فوجی اڈے پر دھماکے، 31 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شام کے شہر حمص میں قائم الشعیرات فوجی اڈے پر گولہ بارود منتقلی کے دوران تکنیکی خرابی کے باعث دھماکوں سے متعدد افراد ہلاک اور زخمی ہو گئے۔

شام کی سرکاری نیوز ایجنسی 'سانا' کے مطابق ہفتے کے روز الشیعرات فوجی اڈے پر ناکارہ قرار دیا گیا گولہ بارود منتقل کرنے کی کوشش کے دوران زور دار دھماکے ہوئے جس کے نتیجے میں متعدد افراد ہلاک ہوگئے۔ تاہم ہلاکتوں کی صحیح تعداد معلوم نہیں ہوسکی۔

شام میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے ادارے سیرین آبزرویٹری کی طرف سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ الشعیرات فوجی اڈے پر دھماکوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 31 تک پہنچ گئی اور کئی افراد زخمی ہوئے ہیں۔ زخمیوں میں سے بعض کی حالت تشویشناک بیان کی جاتی ہے۔

انسانی حقوق آبزر ور رامی عبدالرحمان نے بتایا کہ الشعیرات ہوائی اڈے پر ہونے والے دھماکوں کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی تاہم سرکاری سطح پر یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ یہ دھماکے فنی خرابی کے نتیجے میں ہوئے ہیں۔

خیال رہے کہ الشعیرات فوجی اڈہ شام میں اسد رجیم کا اہم ترین تزویراتی مرکز سمجھا جاتا ہے۔ اس فوجی اڈے پر ایرانی جنگجو بھی موجود ہیں۔ اپریل 2018ء کو خان شیخون کے مقام پرکیمیائی حملے کے ردعمل میں امریکا نے اس فوجی اڈے پر بمباری کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں