.

ایرانی مداخلت کے خلاف امریکا اور یمن کا مل کرکوششیں کرنے پراتفاق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے صدر عبد ربہ منصورھادی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ امریکا اور یمنی حکومت ملک میں ایرانی مداخلت کی روک تھام اور تہران کے مذموم عزائم کے خلاف مل کر کوششیں جاری رکھیں گے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق صدر منصور ھادی نے کہا کہ ایرانی مداخلت، دہشت گردی کے خلاف جنگ اور خطے کو عدم استحکام سےدوچار کرنے کی ایرانی سازشوں کے خلاف امریکا اور یمن باہمی تعاون پر متفق ہیں۔

انہوں نے یمن میں ایرانی مداخلت کے خطرناک نتائج پر خبردار کیا اور کہا کہ ایران کو خطے کا امن تباہ کرنے کی سزا ضرور ملنی چاہیے۔

صدر ھادی نے ان خیالات کا اظہار یمن کے لیے امریکا کے نئے سفیر کریسٹوفر ھنزل سے ملاقات کے موقع پر کیا۔ انہوں نے یمن میں قیام امن کی کوششوں میں امریکی خدمات کو سراہا اور کہا واشنگٹن نے یمن میں امن وامان کے قیام کے لیے قابل قدر کوشش کی ہیں۔

اس موقع پر امریکی سفیر نے یمن کی آئینی حکومت کو اپنے ہرممکن تعاون کا یقین دلایا۔ ان کا کہنا تھا کہ امریکا یمن کی وحدت، اس کی سلامتی اور استحکام کا خواہاں ہے۔ کریسٹوفر ھنزل نے یمن میں ایرانی مداخلت کے مکروہ کردار کی مذمت کی۔

ادرھر یمن میں محاذ جنگ سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق سرکاری فوج نے شمال مغربی حجۃ گورنری میں حرض شہر کے مشرق میں متعدد اہم مقامات باغیوں سے واپس لے لیے ہیں۔