.

حوثی ملیشیا کا باغیوں کے سربراہ کے بھائی کی ہلاکت کا اعتراف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں حوثی ملیشیا نے جمعے کے روز اعتراف کیا ہے کہ باغیوں کے سربراہ عبدالملک الحوثی کا بھائی اور ملیشیا کا ایک اہم کمانڈر ابراہیم بدرالدین الحوثی مارا جا چکا ہے۔

باغی حوثی ملیشیا کی حکومت میں وزارت داخلہ نے ایک بیان میں آگاہ کیا کہ ابراہیم الحوثی کو ایک کارروائی میں ہلاک کر دیا گیا ہے۔

بیان میں ابراہیم کے قتل کے حوالے سے دیگر تفصیلات نہیں بتائی گئیں تاہم وزارت کا کہنا ہے کہ کارروائی کے مرتکب مجرمانہ عناصر کا بلا ہچکچاہٹ تعاقب کیا جائے گا۔

قبائلی ذرائع نے غالب گمان ظاہر کیا ہے کہ حوثی ملیشیا کے سربراہ کا بھائی ممکنہ طور پر دو روز قبل شمالی صنعاء کے داخلی راستے پر گھات لگائے مسلح افراد کے ہاتھوں قتل کیا گیا۔

مذکورہ ذرائع کے مطابق مسلح افراد نے ہلاکت کی کارروائی انجام دی اور فرار ہو گئے۔ ابتدائی رپورٹوں میں مقتول کی شناخت سامنے نہیں آ سکی اور فقط اتنا بتایا گیا کہ وہ حوثی ملیشیا کا ایک سینئر کمانڈر ہے۔

باغی حوثی ملیشیا کے کمانڈروں کے بیچ تنازع کا تناسب قابل توجہ حد تک بڑھ چکا ہے۔ اس سلسلے میں لوٹے گئے مال کی تقسیم اور زیر قبضہ علاقوں میں رسوخ کے حوالے سے اختلافات مذکورہ تنازعات کی اہم ترین وجوہات ہیں۔