'بدعنوانی '۔ عراقی وزیراعظم سے حکومتی کارکردگی پرنظرثانی کا مطالبہ

دفاتر میں صدام کی ہتھکڑی لگی تصویر لگانے کی تجویز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراقی حکومت میں پائی جانے والی کرپشن اور منظم بدعنوانی پرملک کے سیاسی حلقوں کی طرف سے سخت رد عمل ظاہر کیا جا رہا ہے۔ دیالی صوبے میں قائم 'سائرون' اتحاد کے چیئرمین برھان العموری نے وزیراعظم عادل عبدالمہدی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ کابینہ کی کارکردگی پرنظرثانی کے لیےپارلیمنٹ کے ہنگامی اجلاس میں شرکت کریں۔

العموری کا کہنا ہے کہ نئی حکومت کو ایک سال گذر جانے کے بعد بھی بدعنوانی کے کئی کیسز پرکوئی غور نہیں کیا گیا۔

سائرون اتحاد کے سربراہ نے حکومت پرتنقید کرتے ہوئے کہا کہ کرپشن ملک کے تمام اداروں کی رگوں میں داخل ہوچکی ہے اور حکومت کی طرف سے اقتصادی منصوبوں اور اعلانات پرکسی قسم کا عمل درآمد نہیں کیا گیا۔

درایں اثناء عراقی رکن پارلیمنٹ کاظم الصیادی نے تجویز دی ہے کہ پارلیمنٹ اور کابینہ کے اجلاس میں سابق مصلوب صدر صدام حسین کی وہ تصویر لگائیں جس میں اس کے ہاتھوں میں ہتھکڑی لگائی گئی ہے۔

'فیس بک' کے صفحے پرپوسٹ کردہ ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ اور کابینہ کے دفاتر کے اندر صدام حسین کی ہتھکڑی لگی تصویر لگانی چاہیے تاکہ عہدیداروں کو یہ معلوم ہو کہ اقتدار، لوٹ مار اور ظلم ہمیشہ نہیں رہتے دن لوگوں کے درمیان پھرتے رہتے ہیں اور ہمیشہ ایک جیسے نہیں رہتے'۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں