.

ایرانی تیل کی فروخت پرپابندی کے بعد عالمی آبی گذرگاہیں بھی محفوظ نہیں رہیں گی: روحانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی صدر حسن روحانی نے بدھ کے روز ایک بیان میں کہا ہے کہ اگرایران کو عالمی منڈی میں تیل کی فروخت سے روکا جائے گا تو عالمی آبی گذرگاہیں بھی محفوظ نہیں رہیں گی۔

قبل ازیں امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے کہا تھا کہ امریکی صدر نے ایران کو عالمی منڈی میں یومیہ 27 لاکھ بیرل تیل کی فروخت سے محروم کر دیا ہے۔ امریکا کی طرف سے ایران پر دوبارہ پابندیوں کے نفاذ کے بعد تہران کو عالمی منڈی میں تیل کی فروخت میں شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

' ایم ایس ان بی سی' ٹی وی کو دیے گئے انٹرویو میں امریکی وزیرخارجہ نے کہ امریکی حکومت کو مکمل یقین ہے کہ ہم اپنی حکمت عملی کوآگے بڑھانے میں کامیاب رہیں گے۔

خیال رہے کہ امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے 2018ء کو ایران کے ساتھ سنہ 2015ء میں طے پائے جوہری معاہدے سےعلاحدگی کا اعلان کرتے ہوئے ایران سے اٹھائی گئی پابندیاں بحال کرنے کا اعلان کیا تھا۔

عالمی منڈی میں تیل کی سپلائی پرنظر رکھنے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ جوالائی میں ایران نے یومیہ ایک لاکھ بیرل خام تیل فروخت کیا۔ جب کہ پابندیوں سے قبل ایران یومیہ 27 لاکھ بیرل تیل فروخت کرتا رہا ہے.